بریکنگ نیوز: ملکی سیاست میں نیا موڑ۔۔۔ میاں شہباز شریف کو اچانک بڑا ریلیف دے دیا گیا

لاہور(ہاٹ لائن نیوز) ہائیکورٹ نے منی لانڈرنگ کیس میں شہبازشریف کی عبوری ضمانت میں توسیع کردی۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سردار نعیم کی سربراہ میں 2 رکنی بینچ نے شہبازشریف کی درخواست پر سماعت کی جس سلسلے میں لیگی صدر عدالت میں پیش ہوئے۔ عدالت نے شہبازشریف کے وکیل کی عدم حاضری پر ان کی عبوری ضمانت میں 21 ستمبر تک توسیع کردی۔ واضح رہےکہ نیب عدالت نےشہباز شریف کے وارنٹ گرفتاری جاری کر رکھے ہیں۔ شہبازشریف نے مؤقف پیش کیا کہ نیب میں پیش ہوا تو مجھے کہا گیا کہ تفتیش مکمل ہوگئی ہے، میں خود پاکستان آیا ہوں، کینسر کا مریض ہوں، مجھے علاج کے لیے بیرون ملک جانا پڑتا ہے، نیب نے بد نیتی کی بنیاد پر آمدن سے زائد اثاثوں کا کیس بنایا ہے۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ آپ صرف ایون فیلڈ والے کیس کو ہی نہ دیکھیں یہ بھی کیس ہے، آپ ہر دفعہ تین ہفتوں کی درخواست دے دیتے ہیں۔ شہبازشریف نے جواب دیا کہ عدالت دو ہفتوں بعد کی کوئی تاریخ دے دے۔ عدالت نے شہباز شریف کی استدعا مسترد کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ آپ نے کہ تاریخ دیں تو وہ دے دی ہے، پہلے بھی متعدد بار التوا کی درخواست منظور کرچکے ہیں، زیادہ لمبی تاریخ نہیں دے سکتے، عدالت نے منی لانڈرنگ کیس میں شہباز شریف کی عبوری ضمانت میں 21 ستمبر تک توسیع کر دی۔ واضح رہے کہ شہباز شریف نے منی لانڈرنگ کے الزام میں گرفتاری کے خدشے پر عدالت سے رجوع کیا ہے، چیئرمین نیب کی جانب سے ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے جا چکے ہیں۔واضح رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) دستاویزات کے مطابق شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ ریفرنس میں ایک سو دس افراد پر مشتمل گواہوں کی لمبی فہرست تیار کی جا چکی ہے۔ نیب کی مرتب کردہ لسٹ میں گواہوں میں مختلف بینکوں کے نمائندے، ایف بی آر، پٹواری اور دیگر سرکاری محکموں کے افراد شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں