آپ نے جو کہا میں نے کیا، سارے مطالبات پورے کر دیے، پھر بھی۔۔۔ مریم نواز کا ناقابل یقین بیان سامنے آگیا

لاہور (ہاٹ لائن نیوز) مسلم لیگ ن کی رہنما مریم نواز نے ایف بی آر کے نوٹس کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا۔ مریم نواز کی جانب سے لاہور ہائیکورٹ میں دائر درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ لاہور ہائیکورٹ ایف بی آر کی جانب سے بھجوائے گئے نوٹسز اور سنگل بینچ کا فیصلہ کالعدم قرار دے۔

درخواست میں ایف بی آر سمیت دیگر کو فریق بنایا ہے۔ درخواست گزار نے کہا ہے کہ 6لاکھ 57ہزار کے انکم سپورٹ لیوی ٹیکس کے نوٹسز بھجوائے گئے ، تمام ٹیکسز ادا کرنے کے باوجود ایف بی آر نے ریکوری نوٹس بھجوائے۔ مریم نواز نے اپنی درخواست میں مؤقف پیش کیا ہے کہ ایف بی آر کی جانب سے 6 لاکھ 57 ہزار کے انکم سپورٹ لیوی ٹیکس کے نوٹسز بھجوائے گئے ہیں، جب کہ میں قانون کے مطابق سارے ٹیکسز ادا کر رہی ہوں، تمام ٹیکسز ادا کرنے کے باوجود ایف بی آر نے ریکوری کے نوٹس بھجوائے ہیں، جب کہ لاہور ہائیکورٹ کے سنگل بنچ نے بھی ریکارڈ کا درست جائزہ لیے بغیر درخواست خارج کردی۔ درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ لاہور ہائیکورٹ ایف بی آر کی جانب سے بھجوائے گئے نوٹسز اور سنگل بینچ کا فیصلہ کالعدم قرار دے۔ مریم نواز نے اپنی درخواست میں ایف بی آر سمیت دیگر کو فریق بنایا ہے۔ لاہور ہائیکورٹ کا دو رکنی بینچ آج مریم نواز کی درخواست پر سماعت کرے گا۔ واضح رہے کہ ایف بی آر نے مریم نواز پر 6 لاکھ 57 ہزارروپے انکم سپورٹ لیوی اور 6 لاکھ روپے ڈیفالٹ سرچارج عائد کیا جبکہ مجموعی طور پر 12 لاکھ 57 ہزار روپے کے ٹیکس نوٹس جاری کئے گئے۔ مریم نواز کے سال 2013 کے منقولہ اثاثہ جات 13 کروڑ 14 لاکھ روپے پر ٹیکس عائد کیا گیا اور انکم سپورٹ لیوی سال 2013 کی مد میں 6 لاکھ 57 ہزارٹیکس عائد کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں