چینیوں کا پاکستانی لڑکیوں سے شادیوں کا معاملہ۔۔۔۔ہمسایہ ملک کی حکومت نے ایسا اعلان کر دیا کہ عمران حکومت دنگ رہ گئی

بیجنگ ( ویب ڈیسک )پاکستانی لڑکیوں سے چینی لڑکوں کی شادی کا سکینڈل سامنے آنے پر چین نے پاکستان کو تجویز دے دی ہے۔پاکستان میں چین کے ڈپٹی چیف آف مشن لی جیان زاو نے اپنی تجویز میں کہا کہ پاکستان کو اپنی ویزہ پالیسی پر نظر ثانی کرنی چاہیے، پاکستانی

حکومت کی ویزا آن آرائیول پالیسی کا چند میرج بیوروز غلط استعمال کر رہے ہیں۔تفصیلات کے مطابق پاکستانی لڑکیوں سے چینی لڑکوں کی شادی کا سکینڈل سامنے آنے پر چین نے پاکستان کو تجویز دے دی ہے۔پاکستان میں چین کے ڈپٹی چیف آف مشن لی جیان زاو نے اپنی تجویز میں کہا کہ پاکستان کو اپنی ویزہ پالیسی پر نظر ثانی کرنی چاہیے، پاکستانی حکومت کی ویزا آن آرائیول پالیسی کا چند میرج بیوروز غلط استعمال کر رہے ہیں۔ نجی نیوز چینل کے مطابق انہوں نے کہا کہ گذشتہ سال 142 چینی باشندوں نے اپنی پاکستانی بیویوں کے لیے چینی سفارتخانے سے ویزے لیے تھے، اس سال چند ماہ میں ہی 140 کے قریب درخواستیں موصول ہونے پر چینی سفارتخانہ محتاط ہو گیا اور صرف 50 پاکستانی دلہنوں کو ویزے جاری کیے گئے اور باقی 90 کے ویزے روک دیے گئے۔لی جیان زاو نے یہ بھی کہا کہ چینی سفارتخانے نے اس کے ساتھ ہی پاکستانی حکام کو بھی الرٹ کر دیا جس کے بعد پاکستانی اداروں نے تحقیقات شروع کر دیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو کاروبار کے نام پر آنے والے چینی باشندوں کو چیک کرنا چاہیے،جو یہاں آکر شادیاں کرتے ہیں اور پتہ لگانا چاہیے کہ وہ کن کاروباری اداروں اور چیمبرز آف کامرس کی دعوت پر یہاں آئے ہیں۔ واضح رہے اس سے پہلے چینی سفارتخانے نے کہا ہے کہ چین میں پاکستانی خواتین کی جسم فروشی اور انسانی اعضا کی فروخت کے کوئی ثبوت نہیں ملے، شادیوں کی آڑ میں جرائم کی تحقیقات میں پاکستان کے ساتھ تعاون کریں گے۔

چینی سفارت خانے نے ایک بیان میں کہا ہے کہ چین پاکستانی اداروں کے ساتھ مل کر دونوں ممالک کے شہریوں کا تحفظ یقینی بنائے گا، چین میں پاکستانی خواتین کی جسم فروشی اور انسانی اعضا کی فروخت کے ثبوت نہیں ملے، سرحد کے اطراف شادیوں کی آڑ میں جرم کرنے والوں کیخلاف پاکستانی قانون کے مطابق کارروائی کی حمایت کرتے ہیں، ایسے واقعات کی خود بھی تحقیقات کر رہے ہیں۔چینی وزارت پبلک سیکورٹی نے پاکستانی حکام سے تعاون کیلئے ٹاسک فورس بھجوا دی۔ دوسری جانب شادی کا جھانسہ دے کر انسانی سمگلنگ کا معاملے پر چین میدان میں آگیا ، ترجمان چینی سفارتخانے کا کہنا ہے کہ چین پاکستانی اداروں کی جانب سے جرائم پیشہ افراد کیخلاف کارروائی کی حمایت کرتا ہے۔تفصیلات کے مطابق ترجمان چینی سفارتخانے نے شادی کا جھانسہ دے کر انسانی سمگلنگ کا معاملے پر اپنے بیان میں کہا کسی کو بھی کراس بارڈر شادی کے لبادے میں جرائم کے ارتکاب کی اجازت نہیں ہونی چاہیے، پاکستانی اداروں کی جرائم پیشہ افرادکیخلاف کارروائی کی حمایت کرتے ہیں۔ترجمان چینی سفارتخانے کا کہنا تھا چین قانونی شادیوں کے تحفظ اور جرائم کے خاتمے کا حامی ہے ، چینی وزارت پبلک سیکیورٹی نے پاکستانی حکام سے تعاون کیلئے ٹاسک فورس پاکستانی بھیجی ہے ، چین دوطرفہ تعلقات اور شہریوں کے حقوق کے تحفظ میں پاکستان کیساتھ تعاون کو مزید وسیع کرے گا۔ ترجمان نے کہا چین میں ان خواتین میں سے کسی سے جبری غیر اخلاقی کام نہیں کروائے گئے۔ ان خواتین کے جسمانی اعضا کی اسمگلنگ کی اطلاعات بھی غلط ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں