’’ عمران خان کو میرا مشورہ ہے کہ ۔۔۔‘‘ آصف علی زرداری کی نیب عدالت میں پیشی، وزیر اعظم کو حیران کُن مشورہ دے ڈالا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک )وزیراعظم عمران خان کی حکومت نے اپنا پہلا بجٹ پیش کر دیاہے جس میں نئے ٹیکسز عائد کیے گئے ہیں جس پر اپوزیشن کی جانب سے انہیں شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہاہے جبکہ اس نہایت اہم موقع پر سابق صدر آصف علی زرداری اور پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن

لیڈر حمزہ شہبازشریف کرپشن الزامات کے تحت نیب کی حراست میں ہیں ۔سابق صدر آصف علی زرداری نے احتساب عدالت میں صحافیوں سے گفتگو کی جس میں انہوں نے عمران خان کو مشورہ دیتے ہوئے کہاہے کہ ” عمران خان میرا مشور مانیں تو استعفیٰ دیں اور گھر جائیں “۔آصف زرداری نے کہا کہ کل نیب نے میرا روٹین کا چیک اپ کرایا، جب ہم اپنی دنیا میں ہوتے ہیں تواپنا خیال نہیں رکھتے۔کمیشن سے متعلق سوال پر انہوں نے کہا کہ عمران خان اگر 1947 سے کمیشن نہیں بنانا چاہتے تو پچھلے 20 سال کا تو بنائیں، وہ اگر بہت پرانوں کی پگڑیاں نہیں اچھالنا چاہتے تو مشرف کے دور سے تو کریں۔صحافی کے سوال پر جواب دیتے ہوئے آصف زرداری نے کہا کہ بجٹ کی منظوری کا انحصار اب اختر مینگل پر ہے کہ وہ کس جانب بیٹھتے ہیں ۔سابق صدر کا کہنا تھا کہ عمران خان نے کیسے کہا ملک مستحکم ہوگیا؟ کیا لوگوں کی تنخواہیں بڑھ گئی ہیں؟ میرے دور میں تو سب کی تنخواہیں بڑھتی تھیں۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کچھ بھی کہتے رہتے ہیں، انہوں نے تو پہلے کہا تھا کہ خود کو گولی مارلوں گا لیکن سیاست میں نہیں جاو¿ں گا، پھر کہا خودکشی کرلوں گا مگر آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاو¿ں گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں