پاکستانی معیشت کے لیے تباہ کُن خبر۔۔۔ ڈالر 157 روپے کا ہوگیا

کراچی(نیوز ڈیسک) انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں دوسرے دن بھی کمی کا رحجان برقرار ہے اور ڈالر کی قیمت تاریخ کی بلند ترین سطح 157 روپے تک پہنچ گئی۔ڈان نیوز کے مطابق دن کے آغاز پر اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی تجارت 156 روپے 50 پیسے سے شروع ہوئی۔

اس حوالے سے بتایا گیا کہ گزشتہ 10 دن میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کے قدر میں 8 روپے کمی دیکھنے میں آئی اور انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر ریکارڈ سطح یعنی 157 روپے تک پہنچ گیا۔کرنسی ڈیلرز نے ڈالر کی قدر میں اضافے کی وجہ مالی سال کے اختتام کو قرار دے دیا ہے۔ان کے مطابق مالی سال کے اختتام کی تاریخ 30 جون قریب پہنچ رہی اور ساتھ ہی ملٹی نیشنل کمپنیاں اپنا تمام منافع ملک سے باہر بھیج رہی ہیں۔خیال رہے کہ گزشتہ روز (13 جون) کو انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت ایک روپے 60 پیسے اضافے کے ساتھ 153 روپے 60 پیسے ہوگئی تھی۔دوسری جانب اوپن مارکیٹ میں ڈالر ایک روپے 50 پیسے مہنگا ہوکر 153 روپے 50 پیسے کا ہوگیا تھا۔خیال رہے کہ عید الفطر کی چھٹیوں سے قبل بھی انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کا رجحان دیکھا گیا تھا۔انٹر بینک میں امریکی ڈالر 75 پیسے مہنگا ہو کر 148.90 روپے کا ہوگیا تھا جبکہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر 30 پیسے مہنگا ہوکر 148.80 روپے کا ہوگیا تھا۔کرنسی ڈیلرز نے امید ظاہر کی تھی کہ عید کی تعطیلات کے بعد انٹر بینک مارکیٹ میں بھی ڈالر کی طلب کم ہوگی اور وہ کمرشل امپورٹرز جو قیمت میں بہت زیادہ اتار چڑھاؤ کی وجہ سے ڈالر کی ذخیرہ اندوزی کر رہے ہیں وہ بھی اپنے فیصلے پر نظر ثانی کریں گے جس سے انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی طلب کم ہوجائے گی اور اس کے اثرات اس کی قیمت پر بھی پڑیں گے۔واضح رہے کہ مئی میں انٹر بینک اور اوپن مارکیٹ میں روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قدر میں کافی کمی دیکھی گئی تھی۔حکومت پاکستان اور انٹرنیشنل مانیٹر فنڈ (آئی ایم ایف) سے معاہدے کے بعد ڈالر کی قیمت میں گزشتہ ماہ مئی میں ایک ہفتے کے دوران ڈالر کی قدر میں 9 روپے 60 پیسے کا اضافہ ہوگیا تھا اور ڈالر روپے کے مقابلے میں اوپن مارکیٹ میں تقریباً 3 روپے اضافے کے بعد تاریخ کی بلند ترین سطح 154 روپے پر پہنچ گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں