طیب اردگان نے نواز شریف کو بچانے کے لئے رابطہ کیا یا نہیں ؟

لاہور(ویب ڈیسک) نواز شریف کو بچانے کیلئے طیب اردگان نے کوئی سفارش نہیں کی، خدشہ تھا کہ ترک صدر سابق وزیراعظم کو ریلیف دلوانے کیلئے رابطہ کریں گے، تاہم ایسا کچھ نہیں ہوا۔ تفصیلات کے مطابق کچھ عرصہ قبل یہ خبریں سامنے آئی تھیں کہ ترکی کے صدر طیب اردگان نے شریف خاندان کو ریلیف

دلوانے کیلئے وزیراعظم عمران خان سے رابطہ کیا تھا۔ شریف خاندان اور ترک صدر کے خاندان کے درمیان قریبی تعلقات قائم ہیں، اسی لیے دعویٰ کیا گیا کہ طیب اردگان نے شریف خاندان کو ریلیف دلوانے کی کوشش کی ہے۔ تاہم اب اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان نے خود وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسا کچھ نہیں ہوا۔ وزیراعظم کا کہنا ہے کہ خدشہ تھا کہ ترک صدر شریف خاندان کو ریلیف دلوانے کی سفارش کریں گے تاہم انہوں نے ایسا کبھی نہیں کیا۔دوسری جانب میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمرا ن خان کی زیرصدارت اجلاس میں شریف فیملی کیلئے این آر او کا تذکرہ کیا گیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اطلاع ہے شریف فیملی میں سے کسی نے عرب ملک کے سربراہ سے رابطہ کیا ہے۔ لیکن عرب ملک کے سربراہ نے کہا کہ پاکستان کا اندرونی معاملہ ہے۔ وزیراعظم نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ این آر او کسی صورت نہیں ہوگا جتنے مرضی رابطے کرلیں۔مزید برآں وزیراعظم عمران خان سے بلوچستان عوامی پارٹی کے وفد نے منگل کو یہاں ملاقات کی۔ وفد میں وفاقی وزیر برائے دفاعی پیداوار زبیدہ جلال، ممبران قومی اسمبلی سردار محمد اسرار ترین، خالد حسین مگسی، احسان اللہ ریکی اور روبینہ عرفان شامل تھے۔ وزیر دفاع پرویز خٹک، معاونین خصوصی نعیم الحق اور ندیم افضل گوندل ملاقات میں موجود تھے۔اسی طرح وزیراعظم عمران خان سے ارکان قومی اسمبلی طالب حسین نکئی، بیگم شاہین سیف الله تورو، صالح محمد خان، اورنگزیب کھچی، نیاز احمد جھکڑ، عمر اسلم خان اور حاجی امتیاز احمد نے منگل کو پارلیمنٹ ہائوس میں ملاقات کی۔ وزیراعظم آفس کی طرف سے جاری بیان کے مطابق وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے سیاسی امور نعیم الحق بھی ملاقات میں موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں