700 روپے دیہاڑی اور کھانا پینا الگ۔۔۔!!! مولانا فضل الرحمان کے دھرنے میں خیبرپختونخوا سے لوگوں کو کس طرح لایا گیا؟ دھرنے میں شریک نوجوان کے چونکا دینے والے انکشافات

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) آزادی مارچ کے شرکاء کو دیہاڑی پر لانے کا انکشاف، عوامی پشتون خوا ملی پارٹی کے ایک کارکن نے ایک ویڈیو میں اپنے تاثرات بیان کرتے ہوئے کہاکہ یہ لوگ ہمیں دیہاڑی پر لائے ہیں، ہم ستر لوگ پشاور سے آئے ہیں اور 7 سو روپے فی بندہ ہماری دیہاڑی

ہے، یہ جھنڈے انہوں نے ہم کو دیے ہیں اور کہا ہے کہ انہیں گمانا نہیں ہے، دیہاڑی کے علاوہ کھانا پینا بھی ان ہی لوگوں کی ذمہ داری ہے، ان لوگوں نے یہ بھی کہا ہے کہ اگر جھگڑا وگڑا ہو گیا تو وہ بھی کرناہے، اس نوجوان نے کہا کہ آج اب ہم نے دیہاڑی لینی ہے، ہم اچکزئی پارٹی کے ہیں اور دیہاڑی پر آئے ہیں، ڈی چوک پر جا کر ہماری دیہاڑی 2 ہزار فی بندہ ہو جائے گی۔ مولانا فضل الرحمان کے لوگ بھی اور آ رہے ہیں اور ہمارے لوگ بھی مزید آ رہے ہیں۔دوسری جانب آج مولانا فضل الرحما ن نے آزادی مارچ کے شرکاء سے خطاب کیا۔ انہوں نے اسلام آباد میں آزادی مارچ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سال نومبرمیں ہم نے تین ملین مارچ کیے،کہتے ہیں ناموس رسالت ﷺ کا کون سا مسئلہ ہے؟ کیا توہین رسالت کی مرتکب خاتون کو عجلت کے ساتھ ایک ہی پیشی میں بری نہیں کیا گیا؟اس کے بدلے میں بیرون ملک شہریت اور مراعات حاصل نہیں کیے گئے؟ جعلی وزیراعظم نے اس کو ملک سے باہر جانے کے انتظامات کروائے، اگر ایک شخص باعزت بری ہے، تو پھر اپنی ریاست اس کو تحفظ کیوں فراہم نہیں کرسکتی؟ اس کو کیوں دوسرے ملک میں بھیجا گیا؟ملک کا حکمران کیوں دوسرے ملک بھیج رہاہے؟ہم ساری زندگی دیکھا اس ملک میں قوم کو خوف کے مفروضے میں مبتلا کرکے بلیک میل کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ قادیانی فرقے کے سربراہ کے پاس پی ٹی آئی کا وفد نہیں گیا؟ ان سے مدد طلب نہیں کی تھی؟ چند ہفتے پہلے قادیانیوں کے سربراہ نے نہیں کہا تھا کہ ہمارے خلاف آئین میں شق ختم ہونے والی ہے۔اب جب اجتماع کے سرفروش میدان میں آگئے ہیں تو کہتے ہم تو ایسا کچھ نہیں کررہے۔قوم سے جھوٹ نہ بولیں۔ انہوں نے کہا کہ کبھی کہتے کہ قومی کمیشن بنایا جائے دھاندلی کی تحقیقات کی جائیں گی، انتخابی چوری پر پوری قوم آگاہ ہے، جب چوری پوری قوم کے ووٹ کی ہوئی ہوتوپھر تحقیقات نہیں استعفا دینا ہوتا ہے۔انہوں نے آزادی مارچ میں تقریر کے دوران کہا کہ میں ڈی جی آئی ایس پی آر کے اس بیان کا خیر مقدم کرتا ہوں جس میں انہوں نے کہا تھا کہ پاک فوج غیر جانب دار ہے۔ مولانا کے اس بیان پر پاک فوج زندہ باد کے نعرے لگ گئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں