’’پلان بی آئے گا تو سلیکٹڈ اور سلیکٹ کرنے والے۔۔۔۔‘‘ جے یو آئی نے تہلکہ خیز وارننگ جاری کر دی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) رہبر کمیٹی کے سربراہ اکرم خان درانی نے کہاہے کہ پلان بی آئے گا تو حکومت کے اوسان خطا ہوجائیں گے ، حکومت ایک طرف مذاکراتی کمیٹی ہماری طرف بھیج رہی ہے تودوسری طرف پرویز خٹک کچھ اور کہہ رہے ہیں۔جیو نیوز کے پروگرام ”آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھ“میں گفتگو کرتے

ہوئے اکرم درانی نے کہا کہ پلان بی آئے گا تو حکومت کے اوسان خطا ہوجائیں گے ، حکومت ایک طرف مذاکراتی کمیٹی ہماری طرف بھیج رہی ہے تودوسری طرف پرویز خٹک کچھ اور کہہ رہے ہیں۔اکرم خان درانی کا کہناتھا کہ پلان بی کے تحت اسلام آباد میں دھرنا بھی رہے گا اور شاہراہیں بھی بند ہونگی ۔اکرم درانی کا کہنا تھا کہ حکومت یوٹرن لیتی رہتی ہے اوراب بھی یہ یوٹرن لیں گے اور ہمارامطالبہ پورا ہوجائے گا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق جے یو آئی کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہاہے کہ آئین سے دور جائیں گے تو تصادم ہوگا ، اربوں روپے کے فنڈز کاحساب الیکشن کمیشن کونہیں دیا گیا ۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں آزادی مارچ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ اربوں روپے فنڈزکاحساب الیکشن کمیشن کونہیں دیاگیا۔ ایسے لوگوں کاملک پرمسلط ہوناعذاب الہٰی سے کم نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب یہ عدالتوں کے پیچھے چھپ رہے ہیں۔ملک افراتفری کاشکارہے،مہنگائی سے ہرطبقہ پریشان ہے۔ مظاہرین کے مطالبے پرلبنان کے وزیراعظم مستعفی ہوئے۔یہ کہتے تھے اگر15 ہزارلوگ” گوعمران گو”کانعرہ لگائیں تومستعفی ہوجاوں گا۔آئین سے دورجائیں گے توتصادم ہوگا۔ کوئی بھی موجودہ حکومت پراعتمادکرنے کوتیارنہیں ہے ۔مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھاکہ پاکستان کوآئی ایم ایف،ورلڈبینک کاغلام بنادیاگیا، آج ہمارابجٹ آئی ایم ایف تیارکرتاہے۔پاکستانی معیشت کوبین الاقوامی دباوسے نکالناچاہتے ہیں، دوسروں کو چور کہنا آسان ہے ،وسروں کو چور کہتے کہتے خود چور نکل آئے، ہم نے آئین ،جمہوریت اوراصولوں کی جنگ لڑنی ہے، ہم قانون اورآئین کے اندررہتے ہوئے اپنی جنگ لڑیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں