بریکنگ نیوز: اہم ترین معاملہ میں عدالت نے حکومت کو 10 روز کی ڈیڈ لائن دے دی

اسلام آباد(ویب ڈیسک)اسلام آباد ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن ارکان کی تعیناتی کیلئے 10روز کی مہلت دیتے ہوئے سماعت 17دسمبر تک ملتوی کردی،عدالت نے ریمارکس دیئے ہیں کہ عدالت پارلیمنٹ کوسپریم دیکھنا چاہتی ہے، پارلیمنٹیرینز کامسائل عدالتوں میں لانا سمجھ سے بالاہے،پارلیمنٹ کی عزت اور تکریم کا معاملہ ہے، اپوزیشن کےساتھ ساتھ حکومتی بنچز

کی ذمہ داری زیادہ ہے،عدالت نے کہا کہ سب کچھ پارلیمنٹیرینزکے ہاتھ میں ہے، ہم مداخلت نہیں کرسکتے، ماضی میں غلط ہوتا رہا ،اب پارلیمنٹ کی بالادستی ہونی چاہیئے،نیلسن منڈیلا نے 24 سال قید کے بعدسب کومعاف کیا،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ آپکو بہت بڑے بڑے ایشوزپارلیمنٹ میں حل کرنے ہیں یہ تو صرف ممبران کی تعیناتی کا معاملہ ہے، نیلسن منڈیلا نے 24 سال کی قید کے بعد بھی اپنے مخالفین کو معاف کردیا تھا۔تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں الیکشن کمیشن ارکان کی تعیناتی سے متعلق سماعت درخواست پر سماعت ہوئی،درخواستیں لیگی رہنماؤں محسن شاہ نواز رانجھا، مرتضیٰ جاوید عباسی، جہانگیر جدون کی جانب سے دائر کی گئیں،چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی،وفاق کی جانب سے ایڈیشنل اٹارنی جنرل طارق کھوکھر عدالت کے سامنے پیش ہوئے،وکیل نے کہا کہ ممبر الیکشن کمیشن پنجاب الطاف ابراہیم قریشی کل قائم مقام چیف الیکشن کمشنرکاحلف اٹھائیں گے۔سیکرٹری قومی اسمبلی نے کہا کہ الیکشن کمیشن ارکان کی تعیناتی پرپیشرفت ہوئی ہے ،چیئرمین سینیٹ ،سپیکر معاملہ حل کرنے کے قریب ہیں، سپیکرقومی اسمبلی اورچیئرمین سینیٹ نے درخواست کی ہے مزید وقت دیا جائے، محسن شاہ نواز رانجھا نے کہا کہ مسئلہ یہ ہے عمران خان شہبازشریف کے ساتھ بیٹھنا نہیں چاہتے،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہا کہ عدالت پارلیمنٹ کوسپریم دیکھنا چاہتی ہے،پارلیمنٹیرینزکا مسائل عدالتوں میں لانا سمجھ سے بالا ہے،پارلیمنٹ کی عزت اور تکریم کا معاملہ ہے، اپوزیشن کےساتھ ساتھ حکومتی بنچزکی ذمہ داری زیادہ ہے،عدالت نے کہا کہ سب کچھ پارلیمنٹیرینزکے ہاتھ میں ہے،ہم مداخلت نہیں کرسکتے، ماضی میں غلط ہوتا رہا ،

اب پارلیمنٹ کی بالادستی ہونی چاہیئے،نیلسن منڈیلا نے 24 سال قید کے بعد سب کومعاف کیا،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ آپکو بہت بڑے بڑے ایشوزپارلیمنٹ میں حل کرنے ہیں یہ تو صرف ممبران کی تعیناتی کا معاملہ ہے،نیلسن منڈیلا نے 24 سال کی قید کے بعد بھی اپنے مخالفین کو معاف کردیا تھا۔ محسن شاہ نواز رانجھا نے کہا کہ مجھے اس پٹیشن کا نہیں پتا جو سپریم کورٹ میں دائر ہوئی، حکومت کوبھی کہیں کہ نیلسن منڈیلا بنے،سیکرٹری قومی اسمبلی نے کہا کہ سپیکرقومی اسمبلی اور چیرمین سینیٹ نے درخواست کی ہے مزید وقت دیا جائے،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ درخواستگزار بھی وقت دینا چاہتے ہیں دونوں فریق متفق ہیں تو معاملہ حل کرلیں،پارلیمنٹ کی بالادستی قائم کرنے کی ذمے داری آپ پر ہوتی ہے،عدالت حکومت اور اپوزیشن کی کوششوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے،قائد ایوان اور قائد حزب اختلاف کی ذمے داری ہے پارلیمنٹ کی بالادستی قائم کریں۔ محسن شاہ نواز رانجھا نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان اپوزیشن لیڈر کے ساتھ بیٹھنے کے لیے تیار نہیں،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ پارلیمنٹ میں عوامی نمایندے ہیں عوام کا پارلیمنٹ پر اعتماد بحال کریں،محسن شاہ نواز رانجھا نے کہا کہ حکومت کو بھی کہیں نیلسن منڈیلا بنے، اسلام آباد ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن ارکان کی تعیناتی پر مزید 10 دن کا وقت دے دیا،عدالت نے حکومت کو10روزمیں الیکشن کمیشن کے ارکان کامعاملہ حل کرنےکی ہدایت کرتے ہوئے مزید سماعت 17 دسمبر تک ملتوی کردی۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ پارلیمنٹ میں عوامی نمایندے ہیں عوام کا پارلیمنٹ پر اعتماد بحال کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں