اپوزیشن اتحاد ٹوٹ پھوٹ کا شکار۔۔۔ (ن) لیگ اور پیپلز پارٹی اس وقت کس قرب سے گزر رہی ہیں؟ بھانڈا پھوٹ گیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی وزیر فوادچودھری نے کہاہے کہ اپوزیشن کواس وقت دولڑائیاں درپیش ہیں ، ایک پیپلز پارٹی اورن لیگ کی لڑائی ہے اوردوسری لڑائی ن لیگ میں موجوددو دھڑوں میں ہے ۔اے آروائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے فواد چودھری نے کہا کہ عمران خان کے قد کا کوئی لیڈر پاکستان میں

نہیں ہے ، نواز شریف اور آصف زرداری کی کوئی پوزیشن باقی نہیں رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ عملی طور پر عمران خان کے علاوہ پاکستان میں اگلا لیڈر کوئی نہیں ہے۔فواد چودھری کا کہنا تھاکہ دوسری بات یہ ہے کہ اپوزیشن کی دولڑائیاں ہیں ، ایک پیپلز پارٹی اورن لیگ کی لڑائی ہے ، پیپلز پارٹی کہتی ہے کہ ہم نے ترمیم کی اور ن لیگ نے ترمیم نہیں ہونے دی اور ن لیگ نے ہماری پیٹھ میں چھرا گھونپ دیاہے ۔انہوں نے کہا کہ دوسری لڑائی ن لیگ کے اندر ہے جیسے ایک گروپ شہبازشریف کا ہے اور ایک گروپ مریم نواز کا ہے جو آپس میں نبرد آزما ہیں۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق نے سکھایا ہے ،حکمرانی انتہائی سنجیدہ لوگوں کاکام ہے لیکن پاکستان میں حکومت کوایسے لوگوں کے حوالے کردیا گیاہے جنہوں نے اس کومذاق بنالیا ہے۔جیو نیوز کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“میں گفتگو کرتے ہوئے سلیم صافی نے کہا کہ فیصل واڈا نے جو کچھ کیاہے ،ایسا ہم نے کبھی بھی نہیں دیکھا تھا ، ایسے لوگ اقتدار میں آگئے ہیں جو کبھی ایسا سوچ بھی نہیں سکتے تھے ۔انہوں نے کہا کہ حکمرانوں کی ذمہ داری یہ بھی ہوتی ہے کہ دیگر کاموں کے ساتھ ساتھ اپنے اداروں اور لوگوں کا وقار بڑھائیں لیکن جو لوگ حکمران بن گئے ہیں ۔ ان کے لیڈر نے ان کی تربیت ہی ایسے کی ہے کہ دوسرے کوبے عزت کرنا ہے ، اس طرح تربیت نہیں کی کہ کسی کو عزت دیناہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکمرانی انتہائی سنجیدہ لوگوں کاکام ہے لیکن پاکستان میں حکومت کو ایسے لوگوں کے حوالے کردیا گیاہے کہ جنہوں نے اس کومذاق بنالیا ہے ۔سلیم صافی کا کہناتھا کہ فیصل واوڈا صاحب بنیادی طور پر اچھے آدمی ہونگے لیکن جو بحث ہوئی تھی ،اس کو بد قسمتی سے متنازعہ بنادیا گیا ۔ انسان تلخ چکروں پر جتنی جلدی مٹی ڈالے دے اچھا ہوتا ہے لیکن ایک وفاقی وزیرکے ہاتھوں بوٹ لاکر اداروں کو بے عزت کرنے کا ایسا طریقہ ہوسکتاہے؟ جس وزیر کا کام اداروں کی عزت میں اضافہ کرنا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں