اچھا تو یہ بات تھی۔۔۔تحریک انصاف آئی جی سندھ کی تبدیلی سے ناخوش کیوں؟ پول کھل گیا

کراچی (ویب ڈیسک) تحریک انصاف سندھ نے آئی جی کلیم امام کی تبدیلی کے معاملے پر عدالت میں جانے کااعلان کردیا ہے ۔تفصیلات کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حلیم عادل شیخ نے کہاہے کہ ہم کسی صورت آئی جی سندھ کا تبادلہ نہیں ہونے دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ سندھ حکومت پولیس کو گھر کی

لونڈی بنانا چاہتی ہے ، یہ پولیس کو ”آنٹی کرپشن “بنانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیس ترمیمی آرڈیننس ہائیکورٹ کے احکامات کے خلاف ہے ، اس معاملے پر عدالت سمیت ہر فورم پر جائیں گے۔فردوس شمیم نقوی کا کہنا تھا کہ ہمیں سندھ حکومت کی نیت پر ہمیشہ سے شک تھا ، مجھے نہیں پتہ تھا کہ سعید غنی کو انگریزی پڑھنی نہیں آتی ۔ انہوں نے کہا کہ بغیر مشاورت کے آئی جی سندھ کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا ۔ صوبائی حکومت کے تجویز کردہ ناموں کووفاق فائنل نہیں کرسکتا ۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ بوٹ کو سیاست زدہ نہیں کرنا چاہیے، یہ پی ٹی آئی کی پالیسی اورمنشورکا پہلاجزوہے۔ان کا کہنا تھاکہ سیاسی مخالفت کو ایشو تک رہنا چاہیے، بوٹ کو سیاست زدہ نہیں کرنا چاہیے، کسی کویہ حق نہیں دینا چاہتے وہ جماعت کے اندرہویا باہروہ افواج پاکستان کوسیاست زدہ کرے، کسی کوحق نہیں کہ سیاسی اکھاڑے میں اس بوٹ کو لے آئے جوبوٹ دفاعی حصارہے اور محاذ پر ہے، کوئی بھی اس کی حوصلہ افزائی نہیں کرسکتا۔نجی نیوز چینل جیو نیوز کے پروگرام ’ جیوپاکستان‘ میں گفتگو کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ جوبوٹ ٹیبل پررکھا ہوا تھا وہ بوٹ سیاچن، ورکنگ باونڈری اورایل او سی پرہے۔انہوں نے مزید کہا کہ فیصل واوڈا سمجھتے ہیں سوشل میڈیا پر ووٹ کوعزت دوکوبوٹ کوعزت دو کے بیانیے سے جوڑا جارہا ہے، سوشل میڈیا کے اس بیانیے کوقومی بیانیے سے اسی اندازسے نہیں جوڑا جاسکتا، وفاقی وزیرکو کسی ایسے عمل میں شامل نہیں ہونا چاہیے جوسوشل میڈیا کی مہم ہو۔فردوس عاشق اعوان نے کہا نے کہا کہ ن لیگ اداروں کوسیاست زدہ کرتی تھی، افواج پاکستان اورقومی سلامتی کے اداروں کوسیاست میں گھسیٹی تھی، یہ قوم کے ادارے ہیں کسی جماعت یا حکومت کے ادارے نہیں، ہمیں اداروں کوسیاست سے پاک کرنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں