مولانا فضل الرحمان کو خادم حسین ر ضوی سمجھنے کی غلطی مت کرنا کیونکہ۔۔۔۔ مولانا فضل الرحمان کو گرفتاری کے حوالے سے جے یو آئی نے حکومت کودوٹوک پیغام بھجوا دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سینیٹ کے اجلاس میں سنیٹیر مولانا عبدالغفور حیدری نے سخت الفاظ کا استعمال کرتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعظم نے کہا ہے مولانا فضل الرحمن پر آرٹیکل 6 لاگو ہوتا ہے وزیراعظم نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان کو گرفتار کیا جائے اگر وزیراعظم یا حکومت یہ بات کرتی ہے تو اس میں

رکاوٹ کیا ہے؟ اس طرح کی زبان اختیار کرکے یہ کیا ملک کی خدمت کریں گے ایک مرتبہ یہ مولانا فضل الرحمن کو گرفتار کرنے کا تجربہ کرکے تو دیکھیں سمجھ آ جائے گی کہنے اور کرنے میں کتنا فرق ہے وزیراعظم کی بہت شرمناک داستانیں ہیں مولانا عبدالغفور حیدری نے مزید کہا ہے وزیراعظم جعلی الیکشن کے نتیجے میں برسراقتدار آئی اگر وزیراعظم آرٹیکل 62 پر پورا اتریں تو میں استعفی دے دوں گا پرویز مشرف نے ہم پر بغاوت کے مقدمے بنائے، آج ہم کہاں اور پرویز مشرف کہاں ہے؟۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سابق وزیراعظم محمد نواز شریف کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹ سامنے آگئی جس میں ان کی کورونری انجیو گرافی جلد از جلد کرانے کی سفارش کی گئی ہے۔نواز شریف کی 12 بارہ فروری کو معائنے کے بعد تیار کی گئی دو صفحات پر مشتمل مصدقہ رپورٹ امجد پرویز ایڈووکیٹ لاہور ہائیکورٹ میں جمع کرائیں گے۔ رپورٹ کے مطابق نواز شریف کی اگر کورونری انجیو گرافی نہ کرائی گئی تو ان کی جان کو خطرہ ہے۔ نواز شریف کے دل کو خون کی روانی تسلسل سے نہیں ہو رہی ہے۔رپورٹ کے مطابق نوازشریف کے غیر متوازن پلیٹ لیٹس کی وجہ سے ان کی حالت خطرے سے دوچار ہوسکتی ہے۔نوازشریف کے طبی معائنہ کیلئے کنسلٹنٹ ہماٹالوجسٹ ڈاکٹر کاظمی سے 24فروری کا وقت لیا گیا ہے۔رپورٹ میں سفارش کی گئی ہے کہ نوازشریف کو علاج کے لیے برطانیہ میں طبی ماہرین کی زیر نگرانی رہنا چاہیے۔خیال رہے کہ 6 فروری کو سابق وزیر اعظم نوازشریف کی میڈیکل رپورٹس نامکمل ہونے پر پنجاب حکومت نے اعتراضات اٹھا دئیے تھے۔نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کے حوالے سے نئی میڈیکل رپورٹس پنجاب حکومت کے پاس جمع کرائی گئی تھیں تاہم ڈاکٹرز نے میڈیکل رپورٹس کو نامکمل قرار دے دیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں