پنجاب ٹیچرز یونین کا سکولوں کی تالابندی کا اعلان

اوکاڑہ (بیورورپورٹ ) پنجاب ٹیچرز یونین نے تعلیمی اداروں کی نجکاری ،گورنمنٹ اساتذہ کا استحصال ،اساتذہ کی اپ گریڈیشن کانوٹیفیکیشن نہ کرنے ،اساتذہ کو شوکاز نوٹسوں کے اجراء،ہیڈ ماسٹر کے دوسرے اضلاع میں تبادلے،چارٹر ڈآف ڈیمانڈ کی منظوری کے لیے احتجاجی تحریک شروع کرنے ،پنجاب اسمبلی کے سامنے دھرنا دینے ،سکولوں کی تالابندی کرنے کا اعلان کردیا ہے ۔ مرکزی صدررائے غلام مصطفی ریاض اور سیکرٹری جنرل محمد ارشد گل نے اساتذہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت اساتذہ کومیٹھی گولیاں دے رہی ہے اب ہم خاموش نہیں رہیں گے ۔رائے محمد عبداللہ کھرل چیئر مین پنجاب ٹیچرز یونین اوکاڑہ نے کہا کہ اگر 2نومبر تک اساتذہ کے تمام مسائل حل نہ ہوئے تو ہم اپنے حقوق ملنے تک احتجاج جاری رکھیں گے اورخاموش نہیں رہیں گے ۔پرویز اختر مہار صدر اوکاڑہ نے کہا کہ حکومت اپنے معاہدوں اوریقین دہانیوں پر عمل کرے ورنہ تحریک چلانے پر مجبور ہوں گے اوریہ تحریک مطالبات منظور ہونے تک جاری رہیں گے ۔محمد سرور چوہدری جنرل سیکرٹری نے کہا محکمہ تعلیم کو پنجاب حکومت کے ماتحت کیاجائے ۔محمد ارشد کیفی انفارمیشن سیکرٹری نے کہاکہ اگر 2نومبر تک اساتذہ کے تمام مسائل حل نہ ہوئے تو 5نومبرسے اساتذہ برادری پنجاب اسمبلی کے سامنے دھرنا دے گی ۔ دیگر مقررین میں مرزا طارق محمود ،اللہ رکھا گجر ،چوہدری محمد طفیل،رائے کاظم،محمد ادریس بذمی ،محمد اسلم چیئرمین ،محمد یٰسین جٹ،میڈم ثمینہ افتخارصدر خواتین ونگ اوکاڑہ ،راﺅغلام قادر ،محمد جاوید چوہدری ،سعید جمال گجر،فرحان پرویز ،حافظ حفیظ اللہ ،ملک احمد یار، چوہدری عبدالستار ،فداحسین،فرخ اقبال ،وزیر علی جتوئی ،راﺅشرافت ،محمد امتیازاحمداورمحمد رضوان قادری شامل تھے