بزدل بھارت نے سید علی گیلانی کی تدفین نامعلوم مقام پر کردی

سرینگر(انٹرنیشنل ڈیسک)بزدل بھارت سید علی گیلانی سے اتنی خوفزدہ ہیں کہ ان کے جسد خاکی کو تحویل میں لینے کے بعد زبردستی کسی نامعلوم مقام پر تدفین کر دی گئی۔
طویل علالت کے بعد گزشتہ روز خالق حقیقی سے جا ملنے والے سینئر حریت پسند کشمیری رہنما سید علی گیلانی اپنی زندگی میں تو قابض فوج کے لیے خطرہ تھے ہی لیکن ان کے انتقال کے بعد بھی بھارتی فورسز ان سے اتنی خوفزدہ ہیں کہ ان کے جسد خاکی کو تحویل میں لینے کے بعد زبردستی کسی نامعلوم مقام پر تدفین کر دی گئی۔
قابض بھارتی فوج نے حریت رہنما کو ان کی خواہش کے مطابق مزار شہداء قبرستان میں تدفین کی اجازت نہ دی اور بھارتی میڈیا کے مطابق رات کے اندھیرے میں ہی انتہائی سخت سکیورٹی میں سینئر حریت رہنما کی حیدرپورہ کے قبرستان میں تدفین کر دی گئی۔
سید علی گیلانی کے نمائندہ خصوصی عبداللہ گیلانی کی جانب سے بھی اس حوالے سے ایک ویڈیو بیان جاری کیا گیا جس میں انہوں نے بتایا کہ بھارتی فورسز نے قائد تحریکِ آزادیِ کشمیر سید علی گیلانی کا جسد خاکی اپنی تحویل میں لیکر نامعلوم مقام پر ان کی تدفین کر دی۔
سوشل میڈیا کے ذریعے سید علی گیلانی کی تدفین کے موقع کی کچھ تصاویر منظر عام پر آئی ہیں تاہم ان میں بھی سینئر حریت رہنما کا جسد خاکی یا قبر کی تصاویر واضح نہیں ہیں۔