آ ج کا دن عقیدہ ختم نبوت ؐ اور تحریک اکابرین کی امانت ہے

7ستمبر کا دن عقیدہ ختم نبوت اور تحریک اکابرین کی امانت ہے یہ وہ دن ہے جب نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے دشمن کو آشکارا کیا گیا اور قادیانیوں کو ان اصلیت کے مطابق اقلیت قرار دیا گیا نوجوانوں نے ہر قسم کی بے ہودہ محفل چھوڑ دیں نوجوانوں کو گمراہ کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہے۔جھوٹ اور سچ کو ملاکرقادیانی دجل پھیلا ئے اپنے سازشوں میں کامیاب ہونا چاہتا ہے آج کے نوجوان کو سوشل میڈیا اور موبائل اور دیگر ذرائع سے گمراہ کرنے کی بھرپور کوششیں کی جارہی ہیں ان خیالات کا اظہار عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے صوبائی امیر مفتی شہاب الدین پوپلزئی شیخ الحدیث مولانا ادریس مفتی ارشد مدنی اور دیگر علما کرام نے چارسدہ روڈ خزانہ شوگر مل گراؤنڈ پر منعقدہ ختم نبوت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر جمیعت علماء اسلام کے ضلعی امیر مولانا مسکین شاہ دیگر جید علمائے کرام بھی موجود تھے مقررین نے خطاب میں کہا کہ آج کے قادیانیوں کے سازشوں کو بے نقاب کرنے کے لئے مولانا مفتی محمود کی قیادت میں مولانا سمیع الحق مولانا تقی عثمانی مولانا سید نفیس الحسن حضرت بنوری اور دیگر علمائے کرام نے اسمبلی میں قادیانیوں کے سربراہ کو بلایا اور گیارہ دن کی بحث کے بعد یہ قرار پایا کہ قادیانی ایک اقلیت ہے اور وہ مسلمانوں کے خلاف ایک بہت بڑی سازش کے مرتکب ہو رہے ہیں مقررین نے اپنے خطاب میں کہا کہ نوجوان بے ہودہ محفلیں چھوڑ دیں اور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی احادیث کی پیروی کریں اور قادیانیت تک کا راستہ روکیں جو نبی کا وفادار نہیں وہ ہمارا نہیں ہوسکتا جو قادیانی نواز ہو وہ پاکستان کا وفادار کبھی نہیں ہو سکتا انہوں نے کہا کہ جب بھی اسلام کے خلاف سازش ہوئی تو قادیانی نے اس میں سرفہرست رہے ہیں اور آج 7 ستمبر کا دن ہمیں اکابر علماء کی محنت اور تحریک کی یاد دلاتا ہے اوران کے نقشے قدم پر چل کر اس تحریک کو آگے لے جانے کے لیے ہم سے قربانی کا تقاضا کر رہا ہے۔