افغانی مونا لیزا ’’شربت گلہ‘‘ کو ملک بدر کرنے کا حکم

پشاور (ہاٹ لائن ) عدالت نے جعلی شناختی کارڈ بنوانے کا جرم ثابت ہونے پر افغان شہری شربت گلہ کو 15 دن قید اور ایک لاکھ 10 ہزار روپے جرمنے کی ادائیگی کے بعد ملک بدر کرنے کا حکم دے دیا ہے۔
پشاور کی خصوصی عدالت کی جج فرح جمشید نے افغان شہری شربت گلہ کے جعلی شناختی کارڈ بنوانے سے متعلق کیس کی سماعت کی۔ کیس کی سماعت کے دوران افغان خاتون شربت گلہ نے عدالت میں اعتراف جرم کرلیا۔ جس کے بعد خصوصی عدالت نے جعلی شناختی کارڈ بنوانے کا جرم ثابت ہونے پر عالمی شہرت یافتہ افغان خاتون شربت گلہ کو ملک بدر کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔ عدالت نے شربت گلہ کو 15 دن قید اور 1 لاکھ 10 ہزار روپے جرمانے کی سزا بھی سنائی ہے۔
دوسری جانب پاکستان میں تعینات افغان سفیر عمرزخیوال نے دعویٰ کیا ہے کہ جعلی شناختی کارڈ کے کیس کی مجرم شربت گلہ اب قانونی جنگ سے آزاد ہوگئی ہے اور پیر کے روز اپنے ملک واپس چلی جائیں گی اور اسی روز ہی افغان صدر سے ان کی ملاقات متوقع ہے۔
واضح رہے کہ افغان شہری شربت گلہ کو گزشتہ ماہ 26 اکتوبر کو ایف آئی اے نے جعلی شناختی کارڈ بنانے کے الزام میں حراست میں لیا تھا ۔