پی ٹی آئی نے شریف فیملی کیخلاف اہم ترین شواہد جمع کرادیے

اسلام آباد ( ہاٹ لائن ) پاکستان تحریک انصاف نے پاناما لیکس سے متعلق کیس میں شریف خاندان کیخلاف دستاویزات اور شواہد سپریم کورٹ میں جمع کرا دیے۔ شریف خاندان نے چھ ارب روپے سے زائد کا قرض لیا اورمعاف بھی کرایا، پارٹنر خالد سراج نے راز سے پردہ اٹھایا۔
چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے وکیل نعیم بخاری نے وزیر اعظم نوازشریف اور ان کے بچوں کے اثاثوں سے متعلق دستاویزات اور شواہد سپریم کورٹ رجسٹرار آفس میں جمع کرادیے۔ 686 صفحات پر مشتمل دستاویزات اور شواہد کو 5 بند ڈبوں میں جمع کرایا گیا ہے۔ پی ٹی آئی کی جانب سے سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی دستاویزات میں شریف فیملی کے بینک اکاؤنٹس کی تفصیلات اورشریف خاندان کے قرض معافی کے شواہد بھی شامل ہیں۔
دستاویزات کے مطابق شریف خاندان نے 1988سے 1991تک 56ملین روپے ہنڈی کے ذریعے بیرون ملک منتقل کیے۔شریف خاندان نے 145ملین روپے منی لانڈرنگ کے ذریعے بیرون ملک منتقل کیے جبکہ اس دوران نوازشریف نےصرف 897روپے انکم ٹیکس اداکیا۔دستاویزات کے مطابق بیرون ملک بھجوائی گئی رقم کا ٹیکس گوشواروں میں ذکر نہیں کیا گیا۔ شریف فیملی کی منی لانڈرنگ سے پردہ نوازشریف کے کاروباری شراکت دارخالد سراج نےاٹھایا۔شریف خاندان کے قرض معاف کرانے سے متعلق دستاویزات بھی منسلک ہیں، جس کے مطابق شریف خاندان کے ذمہ 6146ملین روپے کے بینک قرضہ جات ہیں۔ دستاویزات میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف کے وزارت خزانہ کے دورمیں ان کی صرف ایک فیکٹری تھی مگر جب وہ وزیراعلیٰ بنے تو شریف فیملی کی انڈسٹری نے تیزی سے ترقی کی.