سرکاری اراضی پر قبضہ سابق ایڈیشنل کلکٹر سمیت ریونیو افسران کی عبوری ضمانتیں منسوخ ، گرفتاری کا حکم

لاہور (ہاٹ لائن) لاہور ہائیکورٹ نے قصور کی حدود میں واقع اربوں روپے کی سرکاری اراضی جعلسازی سے اپنے نام منتقل کرنے والے سابق ایڈیشنل کلکٹر عامر عتیق سمیت ریونیو افسران کی عبوری ضمانتیں منسوخ کرتے ہوئے گرفتار کرنے کا حکم دے دیا۔ گزشتہ روز لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس عبدالسمیع خان نے سابق ایڈیشنل کلکٹر قصور عامر عتیق، عارف علی قادرنائب تحصیلدار،پرویز پٹواری،،عبدالجلیل پٹواری اور شریک ملزمان بریگیڈیئر ریٹائرڈ ابراہیم خالد،،عبدالریاض،ایم اسلم ،سلمان منج کی درخواستوں پر سماعت کی ۔ ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل پنجاب عبدالصمد نے موقف اپنایا کہ ملزمان نے اپنے عہدے کا ناجائزفائدہ اٹھاتے ہوئے ضلع قصورکے موضع لدھیکے میں موجود بارہ سو پانچ کینال ایک مرلے کی سرکاری اراضی جعلی کاغذات تیار کر کے اپنے نام کرا لی اور سرکاری خزانے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا۔ اینٹی کرپشن کی خصوصی عدالت نے ملزمان کی عبوری ضمانتیں منظور کر رکھی ہیں لہٰذا معزز عدالت سے استدعا ہے کہ ملزمان کی ضمانتیں منسوخ کی جائں ۔ جس پر ملزمان کے وکلاءنے موقف اپنایا کہ ان پر لگائے گئے الزامات بے بنیاد ہیں۔ تاہم فاضل عدالت نے فریقین کے وکلاءکے دلائل سننے کے بعد ملزمان کی عبوری ضمانتیں منسوخ کرتے ہوئے انہیں گرفتار کرنے کا حکم دیدیا ۔