واٹر ریٹ میں 800روپے سالانہ اضافہ عوام دشمنی ہے، لالہ مبشر بٹ

سیالکوٹ (بیورورپورٹ ) وکلاءبرائے انسانی حقوق پاکستان کے چیئرمین لالہ مبشر بٹ ایڈووکیٹ، وائس چیئرمین وسیم اقبال مہر ،، عمران سہیل تارڑ، مزمل حسین شاہ، چوہدری محمد یوسف، میاں غلام فاروق ، سید حبیب الحسن صدیق ، میاں یحییٰ اویس، رانا محمد نعیم جاوید ، ملک حسنین طارق، سلمان طارق کھٹانہ ، شبیر الحسن چوہدری اور سید افتخار حسین بخاری ایڈووکیٹس نے تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن سیالکوٹ کی طرف سے واٹر ریٹ میں 800روپے سالانہ اضافہ کو عوام دشمنی قرار دیتے ہوئے اھالیان سیالکوٹ پر بہت بڑا ظلم قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پہلے ہی غریب عوام مہنگائی بے روزگاری سے تنگ آکر اپنے بچے فروخت کرنے اور خودکشیاں کرنے پر مجبور ہیں تو دوسری طرف تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن نے 800روپے اضافہ کر کے غریب عوام کے زخموں پر نمک چھڑک دیا ہے ۔انہوں نے کہا ہے کہ واٹر سپلائی کا نظام پرانا و بوسیدہ پائپ ہونے کی وجہ سے شہریوں کو غلیظ و گندہ پانی فراہم کیا جا رہا ہے جس سے ہزاروں مہلک بیماریاں جنم لے رہی ہیں جو تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کی نااہلی و غفلت کا منہ بولتا ثبوت ہے تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کو اس طرف توجہ دینی چاہیے لیکن تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن نے اپنی نا اہلی و غفلت کو چھپانے کی خاطر 800روپے اضافہ کر کے اھالیان سیالکوٹ پر ایٹم بم گرا دیا ہے ۔آخر میں انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب اور کمشنر گوجرانوالہ ڈویثرن سے تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کی طرف سے بلا جواز واٹر ریٹ میں 800روپے اضافہ کا سخت ترین نوٹس لینے اور 800روپے اضافہ کو فوری طور پر واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔