خراب کارکردگی پر پاکستانی چیف سلیکٹر انضمام الحق مایوس

لاہور(اسپورٹس ڈیسک)ناقص پرفارمنس پر چیف سلیکٹردبے لفظوں میں کھلاڑیوں سے شکوے کرنے لگے جن کا کہنا ہے کہ محمد عامر اور اسد شفیق اپنے ٹیلنٹ کے حساب سے پرفارم نہیں کر رہے جبکہ قومی ٹیم میں برداشت اوراعتماد کی ضرورت ہے ، مصباح الحق کی غیرموجودگی میں ٹیم کی قیادت اظہرعلی کریں گے اور سینئر بیٹسمین یونس خان ان کی رہنمائی کریں گے۔ ایک انٹرویو میں انضمام الحق نے کہا کہ بہتر پرفارمنس اور ٹیم میں جگہ موجود ہونے پر کھلاڑیوں کو چانس دیا جاتا ہے اور اگر کوئی اچھی پرفارمنس کا مالک ہوگا تو اسے ضرور سلیکٹ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا ٹیلنٹ کو آرگنائز کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ بہت سارے نئے کھلاڑی فرسٹ کلاس کرکٹ میں اچھی پرفارمنس دے رہے ہیں جنہیں کیمپ میں بلا کر ٹریننگ دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ اسد شفیق میں جتنا ٹیلنٹ ہے انہوں نے اتنی پرفارمنس نہیں دی جبکہ محمد عامر کی بالنگ بھی بہترین ہے لیکن ویسی پرفارمنس نہیں دے رہے جیسی کیریئر کے آغاز میں تھی البتہ امید ہے وہ بہت جلد اپنی پرانی فارم میں واپس آجائیں گے اور ان کی جانب سے قدرے بہتر کھیل دیکھنے کو ملے گا۔انضمام الحق نے بتایا کہ عمراکمل اور احمد شہزاد کو ڈسپلن کی خلاف ورزی پر سزادی گئی تھی اور سلمان بٹ کو بھی انہوں نے ہی فرسٹ کلاس کھیلنے کی اجازت دی جو مستقل پرفارم کریں گے تو انہیں بھی ٹیم میں شامل کرلیا جا ئے گا اور ان پر کسی قسم کی بھی پابندی عائد نہیں ہے۔ایک سوال کے جواب میں انضمام الحق نے کہا کہ اوپننگ بیٹسمین شرجیل خان اگر کریز پر رک جائے تو بڑا اسکور کرتا ہے اور ڈومیسٹک میں اچھی اوسط کی وجہ سے اسے ٹیسٹ اسکواڈ میں شامل کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ پی ایس ایل کا فائنل پاکستان میں کرانے کی کوشش کر رہا ہے اور ان اقدامات سے پاکستان میں کرکٹ واپس لانے میں آسانی ہوگی۔