گیند تمام کرکٹرز چمکاتے ‘ آئی سی سی نے مجھے قربانی کا بکرا بنایا ‘ ڈوپلیسی

برسبین (ہاٹ لائن) جنوبی افریقی کرکٹ ٹیم کے قائم مقام کپتان فاف ڈوپلیسی کو انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے بال ٹیمپرنگ کامجرم قرار دینے کے باوجود ہلکا ہاتھ رکھا، ان کی جان صرف میچ فیس کی ضبطی میں ہی چھوٹ گئی لیکن رائٹ ہینڈر بیٹسمین نے اس الزام کو سرے سے مسترد کردیا ہے۔ ایڈیلیڈ میں پریس کانفرنس کے دوارن ان کا کہنا ہے مجھے قربانی کا بکرا بنایا گیا ہے۔ ڈوپلیسی پر آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ میچ کے دوران گیند کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کا الزام عائد کیا گیا تھا۔ آئی سی سی کی جانب سے جنوبی افریقی کپتان کو بال ٹیمپرنگ کا مرتکب قرار دیتے ہوئے میچ فیس کا 100 فیصد جرمانہ عائد کردیا گیا۔ زخمی ڈی ویلیئرز کی جگہ ٹیم کی قیادت کرنے والے ڈوپلیسی نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس فیصلے سے ان کی ٹیم کی آسٹریلیا کے خلاف فتح کا مزہ کرکرا ہو گیا اور انہوں نے کبھی بھی دھوکا دینے کی غرض سے ایسا نہیں کیا۔ میں فیصلے سے مکمل طور پر اختلاف کرتا ہوں، میں محسوس کرتا ہوں کہ میں نے کچھ غلط نہیں کیا، میں نے دھوکا دینے کی کوشش نہیں کی، میں صرف گیند کو چمکانے کی کوشش کر رہا تھا اور تمام کرکٹرز ایسا ہی کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ممکنہ طور پر آئی سی سی نے مجھے قربانی کا بکرا بناتے ہوئے میرے خلاف فیصلہ دیا لیکن ہر کسی کے ساتھ ایسا ہی رویہ اختیار کیا جانا چاہیے۔ یاد رہے کہ آسٹریلیا کے خلاف عمدہ کھیل پیش کرنے والی جنوبی افریقی ٹیم 2-0 سے سیریز اپنے نام کر چکی ہے اور اب آسٹریلیا کو ہوم گرائونڈ پر تاریخ میں پہلی مرتبہ سیریز میں کلین سوئپ شکست سے بچنےکا چیلنج درپیش ہے۔ڈیو پلیسی نے اپنی ٹیم کی کامیابیوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ سب سے زیادہ افسوسناک امر یہ ہے کہ ہم نے بہترین کھیل پیش کرتے ہوئے حریف کو ہر شعبے میں مات دی لیکن اس فیصلے نے ہماری فتح کو دھندلا دیا