کشمیری آج دنیا بھر میں یوم سیاہ منا رہے ہیں

سری نگر(ہاٹ لائن ) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی غاصبانہ قبضے کے انہتر سال مکمل ہونے پر آج کشمیری دنیا بھر میں یوم سیاہ منا رہے ہیں۔ ستائیس اکتوبر 1947 کو جنت نظیر وادی کشمیر کا حسن پہلی بار بھارتی فوج کے قدموں سے پامال ہوا۔
یوم سیاہ کے موقع پر حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک کا کہنا تھا کہ جواہر لعل نہرو جو خود سرینگر گئے تھے تو ان کو پتہ تھا کہ کشمیری کیا چاہتے ہیں، اقوام متحدہ کے اندر وہ قراردادیں بھی موجود ہیں۔
رہنما حریت کانفرنس پرویز ایڈوکیٹ نے کہا کہ سیاست کی جگہ ہی نہیں دی گئی یاسین ملک اور صلاح الدین نے الیکشن میں حصہ لیا۔ لیکن تاریخی دھاندلی ہوئی، پھر مسلح جدوجہد شروع ہوئی۔
بھارتی تسلط کے 69 سال مکمل ہونے پر بھی کشمیر میں آزادی کیلئے گونجتی زخمی آوازیں اور چھلنی چہرے بھارت کا اصل چہرہ بے نقاب کر رہے ہیں۔ واضح رہے کہ مقبوضہ وادی میں برہان مظفر وانی کی شہادت کے بعد سے حالات بدستور کشیدہ ہیں اور اب تک سینکڑوں افراد شہید اور ہزاروں زخمی ہوچکے ہیں۔