بھارت کا 5 سو اور 1000کے کرنسی نوٹ ختم کرنے کا اعلان

نئی دہلی(خالد شہزاد فاروقی)بھارت نے رشوت کے خاتمے اور اپنی کرنسی کی ویلیو برقرار رکھنے کے لئے ملک بھر میں 500 اور 1 ہزار کے کرنسی نوٹ آج رات بارہ بجے کے بعد بند کرنے کا اعلان کر دیا ،ملک سے بد عنوانی اور کرپشن کے خاتمے کے لئے سخت فیصلے کرنا شروع کر دیئے ہیں، جس سے بد عنوانی اور کرپشن کے خلاف لڑی جانے والی جنگ جیتنے میں مدد ملے گی ،بھارتی وزیر اعظم کا قوم سے خطاب ۔ بھارتی نجی چینل ’’اے بی پی نیوز ‘‘ کے مطابق ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے 500 اور ایک ہزار روپے کے پرانے نوٹ بند کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہہ جب ہم حکومت میں آئے تو ہم نے عزم کیا تھا کہ ملک سے بد عنوانی اور کرپشن کا خاتمہ کریں گے ،اب ہماری سرکار نے بد عنوانی اور کرپشن کے خاتمے کے لئے سخت اقدامات اور اہم فیصلے کرنا شروع کر دیئے ہیں ،جن کے اثرات عام آدمی کی زندگی پر پڑیں گے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ ملک سے بدعنوانی کے خاتمے کے لئے فوری طور پر 5 سو اور ایک ہزار کے نوٹ ختم کر دیئے جائیں ، آج رات 12 بجے کے بعد اب لوگوں کے پاس موجود پانچ سو اور ایک ہزار کے نوٹ صرف کاغذ کے ایک ٹکڑے کی مانند رہ جائیں گےاور آدھی رات سے 500 اور 1000 کے نوٹ بند ہو جائیں گے، انڈین شہریوں کے پاس 50 دنوں کا وقت ہے، وہ اپنے 500 اور 1000 روپے کے پرانے نوٹ 10 نومبر سے 30 دسمبر 2016 تک اپنے بینک یا پوسٹ آفس کے اکاؤنٹ میں جمع اور تبدیل کروا سکتے ہیں۔نرنیدر مودی نے کہا کہ 500 اور 1000 کے نوٹوں کے علاوہ باقی تمام نوٹ اور سکے باقاعدہ پہلے کی طرح چلتے ہیں اور ان سے لین دین ہو سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ اس لئے کیا گیا ہے تاکہ ایمانداری سے پیسے کمانے والے شہریوں کے مفادات کی پوری حفاظت کی جا سکے،ہندوستانی شہریوں کی رقم انہی کی رہے گی، انہیں فکر کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔بھارتی وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ہم نے کوشش کی ہے کہ پیسے کمانے کے لئے چور دروازوں کو بند کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خوف کو کون نہیں جانتا ؟ملک میں خوف پیدا کرنے والے ان دہشت گردوں کو پیسہ کہاں سے ملتا ہے ؟ جبکہ ہندوستان میں جعلی نوٹوں کا کاروبار بھی عروج پر ہے ،جسے ختم کرنے کے لئے ہم دن رات کام کر رہے ہیں ۔