مقبوضہ کشمیر، احتجاج 5 ویں ماہ میں داخل، بھارت کا مہلک ہتھیاراستعمال کرنے کا فیصلہ

سری نگر ( ہاٹ لائن ) مقبوضہ کشمیرمیں جاری عوامی احتجاجی تحریک اور ہڑتال 5 ویں ماہ میں داخل ہوگئی اور موجودہ احتجاجی تحریک نے دنیاکی تاریخ میں دوسری سب سے طویل ہڑتال کا ریکارڈ قائم کیا ہے۔
علاوہ ازیں مقبوضہ کشمیر میں تعینات بھارتی پیراملٹری سینٹرل ریزرو پولیس فورس، بارڈر سیکیورٹی فورس، پولیس اور بھارتی وزارت داخلہ کے کئی اعلیٰ سطح کے اجلاسوں کے بعد بصارت کے بعد سماعت چھیننے والے نئے مہلک ہتھیاروں کی ایک فہرست تیار کی ہے تاکہ علاقے میں جاری احتجاجی مظاہروں پر قابو پایا جاسکے۔ دریں اثنا حریت رہنماؤں میر واعظ عمر فاروق ، یاسین ملک اور سید علی گیلانی نے تاجروں اور مقامی سیاستدانوں سے ملاقات کی جس میں حکومت مخالف احتجاج جاری رکھنے کے لیے حکمت عملی پر بات چیت کی گئی۔
کشمیر میڈیا سروس کے مطابق4ماہ کے دوران کاروباری ادارے بند رہے اورنجی وسرکاری دفاترمیں مکمل طور ویرانی چھائی رہی۔ 8جولائی کوحزب کمانڈر برہان وانی کی شہادت کے بعد ان کے قتل کے خلاف وادی کے طول وعرض میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوا جو تاحال جاری ہے ۔4ماہ میں112 کشمیری شہید اور16ہزار افرادکو زخمی کیاگیا۔
آزادی پسند جماعتوں کی طرف سے احتجاجی پروگرام جاری کرنے کا سلسلہ بھی جاری ہے،120دن گزرنے کے بعد بھی ہڑتال جاری ہے جس کی وجہ سے عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ہے۔