حریت رہنماء پھر گرفتار، 17 نومبر تک احتجاج کا اعلان

سری نگر(ہاٹ لائن) جمعہ کو احتجاجی سرگرمیاں روکنے کیلئے قابض بھارتی فورسز کا ایک اور جابرانہ اقدام، یاسین ملک کو ایک بار پھر حراست میں لے لیا گیا، میر واعظ عمر فاروق کو بھی نظر بند کردیا گیا، حریت رہنماؤں نے مظالم کیخلاف 17 نومبر تک احتجاج کا اعلان کردیا۔ بھارت کی قابض فوج نے ایک بار پھر کشمیریوں کی آواز کو دبانے کیلئے جابرانہ اقدامات کا آغاز کردیا، 4 ماہ تک بے گناہ قید کاٹنے والے جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے سربراہ یاسین ملک کو پھر حراست میں لے لیا گیا، انہیں میسومہ پولیس اسٹیشن منتقل کردیا گیا، وہ 29 اکتوبر کو رہا ہوئے تھے۔

India Kashmir Protest
India Kashmir Protest

بھارتی فورسز نے میر واعظ عمر فاروق کو بھی گھر میں نظر بند کردیا، یہ گرفتاریاں کل (جمعہ کو) مظالم کیخلاف کشمیریوں کی احتجاجی سرگرمیاں روکنے کیلئے کی گئی ہیں۔ حریت رہنماؤں نے بھارتی مظالم اور بے جا گرفتاریوں کیخلاف 17 نومبر تک احتجاج کا اعلان کردیا۔
kashmir2
کشمیر میں بھارتی فورسز کے مظالم تقریباً 2 ماہ سے جاری ہیں، جس میں 100 سے زائد بے گناہ کشمیری شہید اور ہزاروں زخمی ہوئے، بھارتی قابض فوج کے پیلٹ گن کے بے رحمانہ استعمال سے سیکڑوں افراد کی بینائی بھی ضائع ہوچکی ہے۔