نیوزی لینڈ میں 7.5 شدت کے زلزلے کے بعد مغربی ملک کے مذہبی رہنما کا ایسا اعلان کہ ہنگامہ برپاہوگیا

آک لینڈ (ہاٹ لائن) نیوزی لینڈ میں تین روز قبل آنے والے خوفناک زلزلے کے بعد پورا ملک صدمے کی حالت میں ہے جبکہ تحقیق کار زلزلے کی وجوہات اور اثرات جاننے کی کوششوں میں لگے ہیں، لیکن اسی دوران ملک کے مشہور پادری بشپ برائن تماکی نے اس زلزلے کو گناہ گاروں اور خصوصاً ہم جنس پرستوں کے اعمال کا نتیجہ قرار دے کر نیا ہنگامہ کھڑا کر دیا ہے۔
ڈیسٹنی چرچ کے فیس بک پیج پر پادری برائن تماکی کے خصوصی خطاب کی ویڈیو پوسٹ کی گئی ہے جس میں وہ کہتے ہیں ”روئے زمین پر انسانوں کے کچھ گناہ ایسے بھی ہیں کہ جن کے بوجھ تلے زمین لرز جاتی ہے۔ زمین لرزتی بھی ہے اور پکارتی بھی ہے، اس کی سطح ابل پڑتی ہے، جسے ہم قدرتی آفات کہتے ہیں، کیونکہ اسے ہمارے گناہوں کا بوجھ سہنے کے لئے نہیں بنایا گیا تھا۔ قاتلوں اور ہم جنس پرستوں کے گناہ اسے گہرائی تک لرزا دیتے ہیں۔ ہم پر یہ تباہی اسی لئے آئی ہے۔“
پادری برائن تماکی کے بیان پر نیوزی لینڈ کا ہر طبقہ تنقید کررہا ہے، حتیٰ کہ ان کے ساتھی پادریوں نے بھی ان کے بیان کو غیر مناسب قرار دیا ہے۔ پادری ہیلن جیکوبی نے پادری تماکی کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا، ”خدا اپنے بندوں کو اس طرح سزا نہیں دیتا۔ اگر ایسا ہوتا، اور آپ اس بات کو اس کے منطقی انجام تک لیجاتے، تو کینسر سے مرنے والے بچے کو بھی گناہ گار قرار دینا پڑے گا، اور یہ مضحکہ خیز ہے۔ یہ قطعی طور پر غیر منطقی ہے۔“ (ن ی)