عرب ممالک کا ویزا حاصل کرنے کیلئے اتنی مشکلات کیوں درکار؟

مسقط (ہاٹ لائن ) سلطنت عمان نے سیاحت کی آڑ میں جسم فروشی کرنے والی غیر ملکی خواتین پر قابو پانے کے لئے جنوب مشرقی ایشیاءکے تمام ممالک سے سیاحتی ویزے پر آنے والی خواتین پر سخت پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ جنوب مشرقی ایشیا کے ممالک سے خواتین کی بڑی تعدادسیاحتی ویزہ لے کر آتی ہے لیکن ان کا اصل مقصد کچھ اور ہوتا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ اب ان ممالک سے آنے والی خواتین کو واپسی ٹکٹ لینا ہوگا اور سلطنت میں قیام کے لئے فور سٹار ہوٹل کی بکنگ بھی کروانی ہو گی۔ یہ شرائط پوری کرنے والی خواتین کو صرف 10 دن کا سیاحتی ویزہ دیا جائے گا۔ اس وقت سیاحتی ویزے کی معیاد 30 دن ہے۔ دوبارہ سیاحتی ویزہ حاصل کرنے کی خواہشمند خواتین کو کم از کم ایک ماہ کے لئے واپس جانا ہوگا۔
رپورٹ کے مطابق عمان میں سینکڑوں خواتین کو گزشتہ کچھ عرصے کے دوران جسم فروشی کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے ۔ ان کی اکثریت کا تعلق جنوب مشرقی ایشیا کے ممالک سے بتایا گیا ہے ۔ عمان کے بازاروں اور شیشہ کیفوں میں موجود ان خواتین کی تصاویر بڑی تعداد میں سوشل میڈیا پر گردش کررہی ہیں، جس کے بعد حکام نے ان کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا۔
شہریوں کا کہنا ہے کہ مصروف شاہراہوں پر ان خواتین کی بڑی تعداد نظر آتی ہے جو سرعام لوگوں کو دعوت گناہ دے رہی ہوتی ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ستمبر کے مہینے میں دارالحکومت کے علاقے الخویر سے تھائی لینڈ کی شہری 21 خواتین کو بازیاب کیا گیا جنہیں زبردستی جسم فروشی کے کام پر مجبور کیا گیا تھا۔ اس واقعے کے بعد پولیس نے انسانی سمگلنگ میں ملوث تین تھائی باشندوں کو بھی گرفتار کیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ نئی پابندیوں کے نتیجے میں ناصرف بخوشی مکروہ دھندہ کرنے والی خواتین کا راستہ روکا جاسکے گا بلکہ زبردستی اور دھوکے سے اس کاروبار میں جھونکی جانے والی خواتین کو بھی ظلم سے بچایا جا سکے گا۔ (ن ی)