امریکا نہ ہوتا تو افغانستان کی صورت حال زیادہ خراب ہوتی، روسی صدر

افغانستان میں داعش کی کارروائیاں صورتحال کومزید خراب کررہی ہیں، ولادی میر پیوٹن

ماسکو: روس کے صدر ولادی میر پیوٹن کا کہنا ہے کہ امریکا اگر افغانستان میں نہیں ہوتا تو وہاں امن و امان کی صورت حال آج سے زیادہ خراب ہوتی۔

روسی میڈیا کے مطابق ولادی میر پیوٹن نے روس میں پارلیمانی رہنماؤں کے اجلاس کے دوران کہا ہے کہ روس اور امریکا کے درمیان معاملات ٹھیک نہیں لیکن ہمیں اس معاملے کو معروضی طور پر لینا چاہیے۔ دہشت گردی کے خطرات کے لحاظ سے افغانستان کی صورتحال پہلے سے زیادہ بدتر ہوئی ہے، داعش کی کارروائیاں صورتحال کومزید خراب کررہی ہیں، امریکا اگر افغانستان میں نہ ہوتا تو صورتحال اور بھی گھمبیر ہوجاتی۔

روسی صدر نے افغانستان، تاجکستان اور ازبکستان کی سرحدوں پر طالبان کی موجودگی پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت دہشت گرد گروہ داعش افغانستان میں قدم جمانا چاہتا ہے، داعش اور طالبان کا جھگڑا بھی خطرے کی گھنٹی ہے۔ انہوں نے اس حوالے سے ترکمانستان کے صدرسے بات کی ہے. وہ ترکمانستان گیس ٹرانسمیشن نظام افغانستان سے پاکستان اور بھارت لے جانا چاہتے ہیں، اس پراجیکٹ میں انھوں نے روس کو بھی شرکت کی دعوت دی ہے۔ ہمیں دیکھنا ہوگا کہ اس منصوبے کی کامیابی کے امکانات کس حد تک ہیں۔