Donald Trump

امریکہ تجارتی معاہدے ٹی پی پی کی رکنیت چھوڑ دے گا: نومنتخب صدر

نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں ان کی آمد کے پہلے دن ہی امریکہ عالمی تجارتی معاہدے ٹرانس پیسفک پاٹنرشپ ڈیل سے باہر نکل جائے گا۔ انھوں نے اس بات کا اعلان ایک ویڈیو پیغام کے ذریعے کیا جس میں انھوں نے یہ بتایا کہ جنوری میں صدر کا عہدہ سنبھالنے کے بعد ان کا پہلا کام بحرالکاہل کی 12 ریاستوں کے درمیان علاقائی تجارت کے فروغ کے معاہدے کو منسوخ کرنا ہو گا۔ ٹی پی پی میں شامل ممالک میں آسٹریلیا، ملائیشیا، جاپان، نیوزی لینڈ، کینیڈا اور میکسیکو بھی شامل ہیں۔ اس معاہدے کا مقصد معاشی تعلقات کو فروغ دینا اور پیداوار کو بڑھانا تھا تاہم اس کے ناقدین کا کہنا ہے کہ اس پر خفیہ طریقے سے مذاکرات ہوئے اور یہ بڑی کمپنیوں کو فائدہ دیتی ہے۔ تاہم نومنتخب امریکی صدر نے اپنے پہلے پیغام میں نہ تو صدر اوباما کے کیئر پروگرام پر کوئی بات کی اور نہ ہی انھوں نے میکسیکو کی سرحد پر دیوار بنانے کے بارے میں کچھ کہا۔ یاد رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ یہ دونوں کام وہ ضرور کریں گے۔ گذشتہ ہفتے پیرو میں ملنے والے ایشیا پیسیفک کے سربراہان نے کہا تھا کہ وہ ڈونلڈ ٹرمپ کی مخالفت کے باوجود آزاد تجارتی معاہدے کو جاری رکھیں گے۔