روس ترکی کو دنیا کا خطرناک ترین طیارہ شکن میزائل سسٹم فراہم کرے گا

روس اور ترکی کے درمیان زمین سے فضامیں مارکرنےوالے میزائل کا معاہدہ طے:

انقرہ: ترکی اورروس کے درمیان زمین سے فضا میں مارکرنےوالے دنیا کے خطرناک ایئر ڈیفنس سسٹم ایس 400 کی خریداری کا معاہدہ طے پاگیا ہے۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق ترکی کے دارالحکومت انقرا میں ترکی اور روس کے درمیان زمین سے فضا میں مارکرنےوالے میزائل ’ایس400‘ دفاعی نظام کی خریداری سے متعلق سمجھوتے پر دستخط کردیے گئے ہیں، ترک حکام کا کہنا ہے کہ روس کے ساتھ فوجی تعلقات کو مزید مضبوط کرنےکےلئے اس معاہدے کو حتمی شکل دی گئی ہے۔

مبینہ طورپر ڈھائی ارب ڈالرمالیت کے اس معاہدے پر نیٹو اتحاد کو تشویش ہے، اگرچہ ترکی اور روس نیٹو اتحاد کے اراکین ہیں لیکن روسی ساختہ یہ ایس 400 میزائل سسٹم نیٹو میں شامل نہیں کیا گیا ہے، نیٹو کے اتحادی معاہدے کے مطابق نیٹو میں شریک تمام اتحادی اپنے دفاعی سازوسامان اور اسلحہ کو دیگر اتحادیوں کےساتھ مشترکہ طور پر استعمال کے پابند ہوں گے جبکہ یہ ایس 400 میزائل سسٹم نیٹو کا حصہ نہیں ہے۔
معاہدے کے تحت روس ترکی کو ایس 400 میزائل سسٹم کی دو بیٹریز فراہم کرے گا جبکہ ترک فوج اس کو آزادانہ طورپراستعمال کرنے کا اختیار رکھتی ہے۔

واضح رہے کہ ترک صدر رجب طیب ایردوان نے ستمبر میں اس ڈیل سے متعلق اور پیشگی ادائیگی کے بارے میں انکشاف کیا تھا