pakistan-india-flag

پاک بھارت وفود کی دبئی میں ملاقات،کشیدگی کے خاتمے پر زور

دبئی (ہاٹ لائن) پاکستان اور بھارت کے وفود کا دبئی میں مذاکرات کا چوتھا دور منعقد ہوا جس میں دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی کے خاتمے اور تعلقات کے فروغ کی ضرورت پر زور دیا گیا۔رپورٹ کے مطابق پاکستان کے وفد کی سربراہی سینیٹر محسن لغاری نے کی جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے رکن اسمبلی محمود الرشید اور جہانزیب خان کھچی، ن لیگ کے قاضی عدنان فرید اور ملک محمد احمد خان، ق لیگ کے وکاس حسن موکل، یونیورسٹی برائے ویٹنری اینڈ اینیمل سائنسز کے ڈاکٹر امان اللہ اور ڈاکٹر مسعود ربانی اور ماہر زراعت حامد ملہی شامل تھے۔ بھارت کی جانب سے سابق وزیر مانی شنکر ایّر، ہریانہ اسمبلی کے سپیکر کنور پال، ڈپٹی سپیکر سنتوش یادیو، للت نگر، پرمیندر سنگھ دھل، سی این این آئی بی این کے ایڈیٹر جیوتی کمال، انڈین ایکسپریس کے اسسٹنٹ ایڈیٹر من امن سنگھ چنا اور ڈاکٹر ایم جے خان نے شرکت کی۔اطلاعات کے مطابق مذاکرات میں زراعت اور لائیو سٹاک کے شعبے میں رائج موثر طرز عمل اور پالیسیوں کا تبادلہ کیا گیا۔شرکاءنے اس بات پر زور دیا کہ ان شعبوں میں دونوں ملکوں کے درمیان شراکت داری بڑھانے کی ضرورت ہے جبکہ درپیش مسائل سے نمٹنے کے لیے اصلاحاتی پالیسیوں اور ضابطہ عمل کا تبادلہ ہونا چاہیے۔پہلے سیشن میں ماہرین نے کہا کہ ایسی زرعی پالسیاں اپنانے کی ضرورت ہیں جن سے صارفین اور کسانوں کو فائدہ پہنچ سکے جبکہ فوڈ سیکیورٹی بھی حاصل ہوسکے۔ماہرین نے کہا کہ پانی کی قلت دونوں ملکوں کے لیے فوری طور پر موثر قانون اور پالیسی بنانے کی ضرورت ہے۔