اوسط عمر 76 سے بڑھا کر 80 تک لے جانا چاہتے ہیں ،وزیر صحت

ریاض (ہاٹ لائن )سعودی عرب جیسے خوشحال ملک میں اوسط عمر پہلے ہی پسماندہ ممالک کی نسبت خاصی زیادہ ہے لیکن حکام اس پرمطمئن نہیں ہیں اور اپنے شہریوں کی اوسط عمر میں مزید اضافے کیلئے متحرک ہو گئے ہیں۔ سعودی گزٹ کے رپورٹ کے مطابق اوسط عمر کو76 سے بڑھا کر 80 سال لک لیجانا ویژن 2030ءکے مقاصد میں سے ایک ہے اور محکمہ صحت کے اعلیٰ حکام اس مقصد کے حصول کیلئے سرگرم ہو گئے ہیں۔ دمام میں منعقد ہونے والی آٹھویں ہارٹ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نائب وزیر صحت کے مشیر ڈاکٹر عبدالقادر تاش کا کہنا تھا کہ اس وقت سعودی ہیلتھ کیئر سسٹم کا مرکز مریض ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزارت صحت نے ہیلتھ کیئر خدمات کا دائرہ کار وسیع کر کے اسے تمام شہریوں تک پہنانے کیلئے کام شروع کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مملکت کی 20 فیصد آبادی ٹائپ ٹو ذیابیطس کا شکار ہے جس پر میٹے اور کاربوہائیڈریٹ والی غذاﺅں میں کمی کر کے قابو پایا جا سکتا ہے۔ جبکہ ورزش بھی انتہائی مفیظد ثابت ہو سکتی ہے۔