مطالبات تسلیم نہ کئے تو 30 اکتوبر کو صوبائی دارالحکومت بند کر دیں گے،پراپرٹی ڈیلرز ایسوسی ایشن کی دھمکی

لاہور(ہاٹ لائن) حکومت سے کامیاب مذاکرات کے بعد پراپرٹی ڈیلرزایسوسی ایشن نے مال روڈ پر دیا جانے والا دھرنا ختم کر دیا ،تاہم عہدیداروںنے دھمکی دی ہے کہ اگر 30اکتوبر تک مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو 2نومبرکو صوبائی دارالحکومت کو بند کر دیں گے ،مختلف علاقوںسے تعلق رکھنے والے پراپرٹی ڈیلرز گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں پر جلوسوںکی صورت میں روانہ ہوئے اورلبرٹی گول چکر میں اکٹھے ہو کر مال روڈ پہنچے، پراپرٹی ڈیلرز کے جلوسوں اور احتجاج کے باعث ڈیفنس ، گلبرگ ،مال روڈ،جیل روڈ،قرطبہ چوک ،فاطمہ جناح روڈ سمیت دیگر شاہراہوں پر ٹریفک کا نظام گھنٹوں جام رہا ۔ پراپرٹی ڈیلرزایسوسی ایشن کے جلوس میں شریک مظاہرین سارے راستے اپنے مطالبات کے حق میں اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے ۔ ڈیلرز ایسوسی ایشن کے وفد نے میئر کے متوقع امیدوارخواجہ احمد حسان کی سربراہی میں حکومتی وفد سے ملاقا ت کر کے اپنے مطالبات سے آگاہ ۔ خواجہ احمد حسان نے یقین دہانی کرائی کہ پراپرٹی ڈیلرز ایسوسی ایشن کے مطالبات حل کرائے جائیں گے اور اس کے لئے ان کی وفاقی وزیر خزانہ سے بھی ملاقات کرائی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب پنجاب حکومت خودان کے ساتھ شامل ہوگئی ہے اور معاملات کو ہر صورت حل کرایا جائے گا۔ حکومتی وفد سے مذاکرات کے باوجود پراپرٹی ڈیلرز ایسوسی ایشن نے مال روڈ پر احتجاج کا سلسلہ جاری رکھا ۔ بعدازاں (ن) لیگ لاہورکے صدر و رکن قومی اسمبلی پرویز ملک اور جنرل سیکرٹری خواجہ عمران نذیر نے پراپرٹی ڈیلرزایسوسی ایشن کے نمائندوں سے مذاکرات کئے اور انہیں مسائل حل کرنے کی یقین دہانی کرائی ۔ ایسوسی ایشن کے نمائندوں کا کہنا تھاکہ یکم جولائی سے رئیل اسٹیٹ پر عائد کئے گئے نئے ٹیکسز سے سرمایہ کاری نہ ہونے کے برابررہ گئی ہے۔ حکومت سے مطالبہ ہے ان ٹیکسز کو ختم کیا جائے ۔ سٹاک ایکسچینج کی طرح رئیل اسٹیٹ کیلئے بھی پیکج کا اعلان کیا جائے ۔حکومتی وفد نے اعلان کیا کہ پراپرٹی ڈیلرز ایسوسی ایشن کے نمائندوں کی آج منگل کے روز اسلام آبادمیں وزیر اعظم کے مشیر برائے ریو نیو ہارون اخترسے ملاقات کرائی جائے گی ۔پرپرٹی ڈیلرزایسوسی ایشن ےک نمائندوں کا کہنا ہے کہ حکومت نے30اکتوبر تک مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو دونومبر کو پورے لاہو رکو بند کر دیا جائے گا۔