’میں حاملہ ہوں اور میرا ہونے والا بچہ۔۔۔‘ نوجوان لڑکی نے ایسا اعلان کردیا کہ دنیا بھر کے مسلمانوں اور عیسائیوں کو غصے سے آگ بگولا کردیا

لندن (ہاٹ لائن) مغربی معاشرے میں مذہب کی تضحیک کوئی نئی بات نہیں ہے لیکن برطانیہ سے تعلق رکھنے والی ایک نوعمر لڑکی نے تمام حدیں پھلانگتے ہوئے ایسا افسوسناک دعویٰ کردیا ہے کہ جس نے دنیا بھر کے عیسائیوں کے ساتھ مسلمانوں کی بھی دل آزاری کی ہے۔
اخبار دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 19 سالہ لڑکی ہیلی کا کہنا ہے کہ وہ 9ماہ کی حاملہ ہے اور اس کے پیٹ میں کوئی اور نہیں بلکہ عیسائی مذہب کے بانی و پیشوا حضرت مسیح پرورش پارہے ہیں جو عنقریب جنم کے بعد دنیا میں ظاہر ہوجائیں گے۔ ہیلی کا کہنا ہے کہ گزشتہ 9ماہ کے دوران اس کے وزن میں چھ کلوگرام کا اضافہ ہوچکا ہے اور اس کا بڑھا ہوا پیٹ اس بات کا ثبوت ہے کہ وہ واقعی حاملہ ہے۔
اس لڑکی کے افسوسناک دعوے نے اس کے اپنے گھر والوں کو بھی شرمندہ اور پریشان کردیا ہے۔ مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے ہوئے اس کی والدہ کرسٹی کا کہنا تھا کہ اسے سمجھ نہیں آرہی کہ اپنی بیٹی کا کیا کرے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہیلی جھوٹ بولنے کی عادی ہے لیکن انہیں توقع نہیں تھی کہ وہ اس طرح کا جھوٹ بولے گی۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ان کی بیٹی نفسیاتی مسائل سے دوچارہے جو اس کے افسوسناک دعوے کی ایک وجہ ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے یہ انکشاف بھی کیا کہ ہیلی کا متعدد بار ٹیسٹ کروایا گیا ہے جس میں یہ ثابت ہوا ہے کہ وہ حاملہ نہیں ہے، اس کے باوجود لڑکی بضد ہے کہ وہ حاملہ ہے اور عنقریب بچے کو جنم دینے والی ہے۔ ٹی وی شو ڈاکٹر فل میں بات کرتے ہوئے اس کا کہناتھا کہ اگرچہ اس کے دوست، گھر والے اور میڈیا اس کی بات پر یقین نہیں کررہے لیکن جب عنقریب اس کا بچہ دنیا میں آجائے گا تو سب کویقین آجائے گا۔