مومنہ مستحسن کے ساتھ نوجوانوں کی ایسی شرمناک حرکت کے دوڑ لگانا پڑ گئی

لاہور (ہاٹ لائن) کوک سٹوڈیو کے ’آفریں آفریں‘ سے شہرت کی بلندیوں کو چھونے کے بعد مومنہ مستحسن سے ہر کوئی انٹرویو کی خواہش لئے دل میں پھرتا ہے اور موقع ملنے پر خوشی سے پھولے نہیں سماتا ہے لیکن ایک انٹرویو کے دوران مومنہ کیساتھ ایسا واقعہ پیش آگیا جسے وہ شائد زندگی بھر نہ بھول سکیں گی۔
ایک خاتون اینکر بہت کوششوں کے بعد مومنہ مستحسن سے انٹرویو کیلئے وقت لینے میں کامیاب ہو پائی تھی لیکن صرف ایک غلطی کر بیٹھی اور انٹرویو کیلئے ایک ایسی جگہ کا انتخاب کر لیا کہ ناصرف انٹرویو ہی خراب ہو گیا بلکہ دونوں کو بھاگ کر خود کومحفوظ کرنا پڑا جبکہ کی زندگی کا شائد سب سے یادگار لمحہ ’ڈراﺅنے‘ لمحے میں تبدیل ہو گیا۔
ایک خاتون میزبان مومنہ مستحسن سے فیس بک پر لائیو انٹرویو کیلئے یونیورسٹی کے باہر فٹ پاتھ کا انتخاب کیا اور وہاں لگے ایک جنگلے کے ساتھ کھڑے ہو کر انٹرویو کی ’کارروائی‘ شروع کی۔ میزبان مومنہ سے سوالات کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے تھی کہ وہاں کچھ ’شرارتی‘ لڑکے پہنچ گئے اور یہ بھانپ لیا کہ یہاں کچھ ’لائیو‘ چل رہا ہے۔ بس پھر کیا تھا! چند شریر لڑکوں نے کیمرے کے سامنے آ کر ناصرف شورو غل مچانا شروع کر دیا بلکہ ہاتھوں سے اشارے بھی کرتے رہے۔
لڑکوں کی اس شرارت پر میزبان اور مومنہ مسکرا کر رہ گئیں اور انٹرویو کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے سوچا کہ شائد یہ سلسلہ ختم ہو گیا لیکن کچھ ہی دیر بعد لڑکوں کی تعداد میں مزید اضافہ ہو گیا اور دونوں نے وہاں سے بھاگ کر محفوظ جگہ پر پہنچنے میں ہی عافیت سمجھی۔ لائیو انٹرویو کے دوران ہی دونوں نے وہاں سے چلنا شروع کر دیا لیکن لڑکے پھر بھی باز نہ آئے اور وہ بھی ان کے پیچھے چلتے چلتے شور مچانے لگے اور ہاتھوں سے اشارے کرنے لگے۔ اس دوران دونوں کو کافی چلنا پڑے اور سڑک کی دوسری جانب ’پناہ‘ لینا پڑی۔