مجھے الزامات کی بنا پر ہٹانے کا تاثر غلط ہے: ڈاکٹر عشرت العباد خان

کراچی (ہاٹ لائن ) سابق گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان کا کہنا ہےکہ یہ تاثر غلط ہےکہ مجھے کسی الزامات کی بنا پر ہٹایا گیا لیکن یہ وفاق کا استحقاق ہے اور اس فیصلے کو قبول کرتا ہوں۔
گورنر ہائوس میں میڈیا سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر عشرت العباد خان نے کہا یہ تاثر غلط ہے كہ مجھے كسی الزامات كی بنا پر ہٹایا گیا ہے، میرے متعلق جو باتیں منسوب كی جارہی ہیں وہ درست نہیں ہیں، وفاقی حكومت نے مجھے عہدے سے ہٹایا ہے جو وفاق كا استحقاق ہے اس فیصلے كو قبول كرتا ہوں۔ انہوں نے كہا كہ 14 برس سندھ كو گورنررہا، عوامی مسائل بلاتقریق خدمت حل كیے۔
گورنر سندھ نے کہا کہ ابھی آرام كروں گا اور ایك كتاب ’’وہ جو میں كہہ نہ سكا‘‘ لكھوں گا اس كتاب میں بطور گورنر اپنی 14برس كے واقعات اور یاداشتوں كو قلمبند كروں گا۔ انہوں نے كہا كہ سیاست كرنے كا فیصلہ نہیں كیا ہے جب سوچوں گا تو بتادوں گا۔ ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ میرے فکر نہ کریں سب کچھ ٹھیک ہے، نئے گورنر سندھ جسٹس(ر) سعید الزماں صدیقی صوبے كی بہتر انداز میں خدمت كریں گے۔