جیل میرے لئے کوئی نئی بات نہیں ، جو ڈرتا ہے کسی اور ملک جا کر سیاست کرے ، زرداری

اسلام آباد(ہاٹ لائن)سابق صدرآصف علی زرداری نے کہاہے کہ جیل ان کے لئے کوئی نئی بات نہیں جیل سے نہیں گھبراتے،اگر کوئی سیاستدان جیل جانے سے ڈرتا ہے تو پھر پاکستان میں نہیں بلکہ کسی اور ملک میں جا کر سیاست کرے، بلاول کے چار مطالبات نہایت درست ہیں ،پانامہ لیکس پر سپریم کورٹ نہیں جانا چاہیے تھا ، جمہوریت کی نشوونما پارلیمنٹ میں ہی ہوتی ہے، ٹی وی ٹاک شوز میں سیاستدان ایک دوسرے کو برابھلا کہتے ہیں ، کمپیئر ہی کی آخر میں جیت ہوتی ہے،سیاستدانوں سے کہتاہوں انہیں سوچنا چاہیے اور سیاستدان اپنی عزت خود کرا سکتے ہیں،اختلافات پارلیمنٹ میں طے کرنے چاہئیں،وزیراعظم نواز شریف سے رابطہ صرف قائد حزب اختلاف خورشید شاہ کے ذریعے ہے۔ ایک نجی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے آصف علی زرداری نے کہا کہ اگر وہ بلاول کو سیاست میں نہ لاتے تو انہیں ایسا محسوس ہوتا کہ وہ بھٹوز کے ساتھ بے وفائی کر رہے ہیں۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو کی قبر پر جو الفاظ کندہ ہیں وہ یہ ہیں کہ “یہاں عوام کا خادم دفن ہے”۔ میں اس جدوجہد کو ختم نہیں کر سکتا۔ بے شک بلاول کے لئے سکیورٹی خدشات موجود ہیں لیکن میرا اس بات پر یقین ہے کہ مارنے والے سے بچانے والا کہیں زیادہ بڑا ہے۔سابق صدر نے کہا کہ وہ جلاوطن نہیں ، وطن سے دور ضرور ہیں۔ سیاست میں ٹائمنگ بہت اہم ہوتی ہے۔ بلاول کو ذمہ داری دینے کے لئے انہوں نے بیک سیٹ لے لی ہے اور بلاول بہت اچھا کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ عنقریب پاکستان آئیں گے اور اس میں چند ہفتے ہی باقی ہیں۔ ڈاکٹر عاصم کی گرفتاری پر کئے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر عاصم ایک انتہائی نفیس اور پڑھے لکھے خاندان کے چشم و چراغ ہیں اور ڈاکٹر ضیاالدین یونیورسٹی کے وائس چانسلر تھے۔ ڈاکٹر عاصم کی گرفتاری کا ازالہ کرنا پڑے گا اور وقت اور تاریخ میں ہر کسی کو ازالہ دینا پڑتا ہے۔ جنرل مشرف کی مثال دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جنرل مشرف کو بھی ازالہ دینا پڑا اور وہ اقتدار میں رہنے کے لئے بھیک مانگتا رہا۔ ڈاکٹر عاصم ایک غلط فہمی کی وجہ سے گرفتار ہوئے کیونکہ وہ سوفٹ ٹارگٹ تھے لیکن ایک کیس میں ان کی ضمانت ہو چکی ہے اور انشااللہ جلد ہی دوسرے کیس میں بھی ان کی ضمانت ہو جائے گی کیونکہ سیاسی لوگوں کو وقت ہی ریلیف دیتا ہے۔ اپنی پاکستان واپسی پر گرفتاری کے خدشات کے سوال پر انہوں نے کہا کہ جیل ان کے لئے کوئی نئی بات نہیں اور وہ جیل سے نہیں گھبراتے۔سابق صدر نے کہا کہ بہت جلد پاکستان آﺅں گا،تاریخ اپنے آپ کو خود دہراتی ہے ، مشرف آج خود اپنے کیے کا خمیازہ بھگت رہا ہے وہ بھیک مانگتا رہا لیکن ہم نے اس کو مکھی کی طرح دودھ سے باہر نکال دیا ، سابق آرمی چیف جنرل (ر) اشفاق پرویز کیانی کی مدت ملازمت میں توسیع کر کے خود کو اور پارلیمنٹ کو مضبوط کیا ۔ ڈاکٹر عاصم نہایت شریف ، پڑھے لکھے اور عمدہ انسان ہیں ، بہت جلد تمام مقدمات سے بری ہوجائیں گے۔