پاکستان خطرناک حد تک قرضوں تلے دب گیا، بلاول بھٹو کا پردہ اٹھا دیا

کراچی (ہاٹ لائن) پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے الزام عائد کیا ہے کہ وزیر اعظم میاں نواز شریف کی حکومت ملک کو خطرناک حد تک قرضوں تلے دھکیل دیا ہے، مسلم لیگ (ن)کی حکومت نے گزشتہ تین سالوں میں ملک کو مزید8 ٹریلین روپے کا مقروض بنا دیا ہے جو گزشتہ 66 سالوں میں لیے گئے قرضوں کا ایک تہائی تین فیصد بنتا ہے۔ اپنے ایک بیان میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ قرضوں سے متعلق مذکورہ خوفناک اعداد و شمار اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے نیشنل ڈیٹا سمری نامی دستاویز میں دیے گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ ملک کے عوام کو قرضوں کے پہاڑ تلے دبایا جا رہا ہے، نواز شریف ملک کو خوشحال بنانے کے ہمارے خواب چکنا چور کرتے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت کی جانب سے محض تین سال کی مختصر مدت کے دوران ملک کو اتنے بڑے پیمانے پر مقروض کردینے سے پانامہ گیٹ اسکینڈل کی تحقیقات کو مزید تقویت بخشی ہے یہ ہی وجہ ہے کہ نواز شریف اور ان کی ٹیم پیپلز پارٹی کے پانامہ گیٹ بل کو پارلیمنٹ سے منظوری سے روکنا چاہتے ہیں۔ بلاول نے کہا ہے کہ اسٹیٹ بینک کی رپورٹ کے مطابق ڈومیسٹک قرضوں میں 5.26 ٹریلین روپے اور بیرونی قرضوں میں 2.5ٹریلین روپے کا اضافہ ہوا ہے، اس اضافہ سے قرضوں کا مجموعی حجم 22 ٹریلین تک پہنچ چکا ہے جبکہ جون 2013 میں یہ حجم 14.32 تک تھا، بلاول نے کہا کہ جون 2013 تک ڈومیسٹک قرضے 9.52 ٹریلین تھے جبکہ بیرونی قرضے 4.8ٹریلین تھے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی اس طرح کی خودکش اقتصادی پالیسوں کو قبول نہیں کرے گی، انہوں نے پارلیمنٹ میں موجود تمام سیاسی جماعتوں سے کہا ہے کہ ان پالیسوں کے خلاف پیپلز پارٹی کے ساتھ مل کر آواز اٹھائیں۔