نواز شریف سعودی عرب پہنچ گئے، اہم شخصیات سے ملاقات متوقع

مسلم لیگ (ن) کے صدر اور سابق وزیراعظم میاں نواز شریف سعودی عرب پہنچ گئے جہاں وہ مختلف شخصیات سے اہم ملاقاتیں کریں گے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف لاہور سے سعودی عرب روانہ ہوئے جبکہ سعودی عرب میں پہلے سے موجود وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف عمرے کی ادائیگی کے لیے مکہ مکرمہ پہنچ گئے ہیں۔

نوازشریف اور شہبازشریف کی آج سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سمیت دیگر اہم سعودی شخصیات سے اکٹھے ملاقات کا امکان ہے۔

خیال رہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف 27 دسمبر کو خصوصی دورے پر سعودی عرب روانہ ہوئے تھے جن کے لیے سعودی عرب سے خصوصی طیارہ بھیجا گیا تھا۔

ذرائع کے مطابق نواز شریف بھی سعودی عرب کے لیے روانہ ہوگئے ہیں اور ان کے پروگرام میں تبدیلی کی گئی ہے اور اب وہ جدہ کے بجائے ریاض جائیں گے۔

ذرائع نے بتایا کہ نواز شریف 30 دسمبر کو سعودی ایئر لائن کی پرواز ایس وی 739 سے ریاض روانہ ہوئے ، اس سے قبل نواز شریف کا ایس وی737 کے ذریعے جدہ روانگی کاشیڈول تھا۔

شہبازشریف اور سعد رفیق پہلے ہی سعودی عرب میں موجود ہیں
وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اور وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق پہلے سے ہی سعودی عرب میں موجود ہیں۔
(ن) لیگی رہنماؤں کے الگ الگ بیانات
شریف برادران کے سعودی عرب کے دورے پر مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں کی جانب سے متضاد بیانات سامنے آرہے ہیں۔

گزشتہ روز وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ مقدس مقام ہونے کی وجہ سے کوئی نہ کوئی وزیر یا حکومتی شخصیت سعودی عرب جاتی ہے، اس لیے ضروری نہیں کہ ہرکوئی سعودی عرب جاکرسیاست کرے۔

رانا ثنااللہ نے جیونیوز کے پروگرام ’آج شاہ زیب خانزادہ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے کہ کہا کہ سعودی عرب میں ملک کے معاملات پر نہیں، خطے اور مسلم دنیا کے مسائل پر بات ہوگی، نوازشریف اور شہبازشریف سعودی عرب میں مسلم دنیا کے مسائل پر بات کریں گے۔
وزیر قانون پنجاب کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کی بات بالکل غلط ہے کہ سعودی عرب میں کوئی این آر او ہو رہاہے، اگر سعودی عرب این آر او کروا رہا ہے تو بتائیں کہ دوسرا فریق کہاں ہے؟

جب کہ سینیٹر مشاہد اللہ کا کہنا تھا کہ پاکستانی سیاست میں سعودی عمل دخل کوئی نئی بات نہیں، ماضی میں پی این اے کی تحریک کے دوران بھی سعودی عرب نے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان کردار ادا کرچکی ہے۔

ن لیگ کے رہنما سینیٹر پرویز رشید کا کہنا ہے کہ صدر مسلم لیگ (ن) نواز شریف کے دورہ سعودی عرب کو ذاتی قرار دینے والے لوگ ناواقف ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جو لوگ کہہ رہے ہیں کہ یہ دورہ ذاتی ہے ، وہ دو ریاستوں کے تعلقات کی نوعیت سے ناواقف ہیں ، ایسی بات بین الاقوامی رشتوں کی اہمیت سے بے خبر کھلاڑی ہی کرسکتے ہیں۔

پرویز رشید نے کہا کہ عمران اور ان کے حواری نواز شریف کے دورہ سعودی عرب پر خاموشی اختیار کریں