کراچی میں چھری مار گروپ کے پیچھے سیاسی ایجنڈا تھا، پولیس چیف

کراچی پولیس چیف مشتاق مہر کا کہنا ہے کہ کراچی میں چھری مار وارداتوں کے پیچھے کوئی ایک شخص نہیں بلکہ تین سے چار لوگ تھے اور اس کے پس پردہ سیاسی ایجنڈا تھا۔

انٹرویو کے دوران مشتاق مہر کا کہنا تھا کہ کراچی میں چھری مار واردات کا معاملہ حل ہوگیا اور ملزمان کی نشاندہی کرلی گئی ہے تاہم انہیں گرفتار نہیں کیا جاسکا۔

مشتاق مہر کا کہنا تھا کہ گلستان جوہر اور گلشن اقبال میں چھری سے خواتین کو نشانہ بنانے والا ایک شخص نہیں بلکہ اس میں تین سے چار لوگ ملوث تھے اور ان وارداتوں کو رکوانے میں پولیس کا اہم کردار ہے جب کہ اس کے پس پردہ سیاسی ایجنڈا تھا۔

خیال رہے کہ ستمبر اور اکتوبر کے مہینے میں کراچی کے علاقے گلستان جوہر اور گلشن اقبال میں خواتین کو چھری کے وار سے زخمی کرنے کے واقعات پیش آئے۔

چھری یا تیز دھار آلے سے 16 خواتین کو نشانہ بنایا گیا جس سے نہ صرف شہر بھر ملک بھر میں خوف و ہراس پھیلا جب کہ پولیس نے گوجرانوالہ سے محمد وسیم نامی شخص کو گرفتار کیا تاہم وہ ان وارداتوں سے لاعلم معلوم ہو