وزیراعلیٰ بلوچستان کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لانے کی تیاری

کوئٹہ: بلوچستان اسمبلی کے اراکین نے وزیراعلیٰ بلوچستان نواب ثناء اللہ زہری کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لانے کی تیاریاں شروع کردیں۔

بلوچستان اسمبلی کے 14 اراکین کی جانب سے وزیراعلیٰ کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لائی جارہی ہے جب کہ عدم اعتماد کی دستاویز پر اراکین کے دستخط بھی موجود ہیں۔

عدم اعتماد کی تحریک پر رکن اسمبلی میر قدوس بزنجو، میر کریم نوشیروانی، آغا رضا، میر خالد لانگو، نوابزادہ طارق مگسی، ڈاکٹر رقیہ سعید ہاشمی، محمد اختر مگسی، زمرد خان اچکزئی، حسین بانو، شاہدہ رؤف، خلیل الرحمان، عبدالمالک کاکٹر اور امان اللہ نوتیزئی شامل ہیں۔

خیال رہے کہ وزیراعلیٰ بلوچستان نواب ثنااللہ زہری کا تعلق مسلم لیگ (ن) سے ہے اور ان سے قبل نیشنل پارٹی سے تعلق رکھنے والے عبدالمالک بلوچ وزیراعلیٰ بلوچستان کے عہدے پر فائز تھے۔

2013 کے عام انتخابات کے بعد وزیراعلیٰ بلوچستان کے عہدے کے لئے مسلم لیگ (ن) اور نیشنل پارٹی کے درمیان ایک معاہدہ طے پایا تھا۔

جس کے تحت ابتدائی ڈھائی سال کی مدت کے لئے نیشنل پارٹی کے وزیراعلیٰ رہے جس کے بعد انہیں عہدہ مسلم لیگ (ن) کے رکن کے لئے خالی کرنا تھا۔

اس فارمولے کے تحت ابتدائی ڈھائی سال کے لئے نیشنل پارٹی کے عبدالمالک بلوچ نے وزیراعلیٰ کی حیثیت سے خدمات انجام دیں اور ان دنوں مسلم لیگ (ن) کے نواب ثنااللہ زہری وزیراعلیٰ کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں۔