mamnoon-hussain

پاکستان نے خطے کو ایٹمی توازن قائم کر کے کسی بھی قسم کے حادثے سے محفوظ رکھا، صدر ممنون حسین

کراچی(ہاٹ لائن) صدر مملکت ممنون حسین نے کہا ہے کہ پاکستان نے خطے میں ایٹمی توازن قائم کر کے خطے کو کسی بھی قسم کے حادثے سے محفوظ رکھا ہے،پاکستان کی دفاعی پیدوار میں اضافے کا مقصد خطے میں طاقت کا توازن قائم رکھنا ہے،پاکستان ایک پر امن ملک ہے اور بھارت سمیت تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ برابری کے سطح پر دوستانہ تعلقات کا خواہش مند ہے، خطے کے ممالک کو ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھ کر عالم انسانیت کو ہمہ گیر تباہی سے بچانے کے لیے دوسروں کے داخلی معاملات میں دخل اندازی سے گریزکرنا چاہیے۔ صدر مملکت نے کہا کہ علاقائی امن و استحکام کے ذریعے ہی خطے میں ترقی اور خوش حالی کو یقینی بنایاجا سکتا ہے۔صدر مملکت نے یہ بات کراچی میں آئیڈیاز 2016 ءکے موقع پر “علاقائی امن کی معیشت” کے عنوان سے منعقدہ سیمینار سے صدارتی خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں وفاقی وزیر برائے دفاعی پیداواررانا تنویر حسین، وزرائے کرام، اراکین پارلیمنٹ،مسلح افواج کے سربراہان اور ڈائریکٹر جنرل DEPOمیجر جنرل آغا مسعوداکرم کے علاوہ معزز مہمانان کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔صدر مملکت نے کہا کہ حکومت کی بہتر معا شی پالیسیوں کی وجہ سے پاکستان دفاعی پیداوار سمیت مختلف شعبوں میں تیزی سے ترقی کی جانب گامزن ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دفاعی پیداوار کی اس نمائش میں پہلے کے مقابلے میں زیادہ ممالک شرکت کر رہے ہیں۔صدر مملکت نے کہا کہ آپریشن ضربِ عضب اور نیشنل ایکشن پلان کی وجہ سے پاکستان نے دہشت گردی پر قابو پا کر دنیا کے لیے ایک مثال قائم کر دی ہے۔ انھوں نے کہا کہ دفاعی مصنوعات کی یہ شاندار نمائش پاکستان کی دفاعی صنعت اور اس سے متعلقہ ماہرین ، کارکنوں کی غیر معمولی مہارت اور اپنے مقصد سے وابستگی کی مظہر ہے جس پروہ مبارک باد کے مستحق ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اس طرح کے مواقع ماہرین اور کارکنوں کے درمیان تعلیم و تحقیق اور تجربات میں اشتراک کا ذریعہ بنتے ہیں۔ آئیڈیاز نمائش کے موقع پر علمی نشستیں اور اس طرح کے سیمینار اب ایک پختہ روایت کی حیثیت اختیار کر چکے ہیں، دفاعی علوم سے وابستہ ماہرین کو جس کا انتظار رہتا ہے کیونکہ ان علمی مباحث کی افادیت عالمی سطح پر محسوس کی جانے لگی ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان کو گزشتہ چند برسوں کے دوران کئی چیلنجوں کا سامنا رہا ہے جن سے نمٹنے کے لیے حکومتِ پاکستان نے ایک جامع حکمتِ عملی کے تحت تعلیم کے شعبے میں سرمایہ کاری کے ذریعے عوام اور بالخصوص نوجوانوں میں صحت مندسرگرمیوں کو وسعت دی تاکہ دہشت گردی کا خاتمہ کر کے معیشت کا احیا کیا جا سکے۔ صدر مملکت نے کہا کہ حکومت کی ان کوششوں کے انتہائی مفید اثرات خطے میں بھی محسوس کیے جا رہے ہیں جو کہ ہمسایہ ممالک اور عالمی برادری کے لیے بھی باعثِ اطمینان ہیں۔