siraj-ul-haq

پانامہ لیکس کیس سیاسی مقدمہ نہیں ،ملکی سلامتی ،بقا کا مسئلہ ہے ،سراج الحق

لاہور(ہاٹ لائن ) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ کرپٹ اشرافیہ اور حکمران ٹولہ ہمیشہ قانون کی گرفت سے بچ نکلنے میں کامیاب ہوجاتا ہے ،ان لٹیروں کا کبھی احتساب نہیں ہوا ،جس سے عوام ایک خطرہ محسوس کررہے کہ اس بار بھی سرمایہ داروں کیلئے نظریہ ضرورت کا کوئی دروازہ نہ کھل جائے ،عدالت عظمی سے ایک بار نہیں ہزار بار درخواست ہے کہ قوم کو مایوس نہ کرنا اگر اس بار عوام مایوس ہوئے تو ملک میں انارکی اور خانہ جنگی کا خطرہ ہے ،پانامہ لیکس کیس کوئی سیاسی مقدمہ نہیں بلکہ یہ ملکی سلامتی اور بقا کا مسئلہ ہے ،حکمران ٹولہ اپنی تعیشات کیلئے غریب عوام پر ظالمانہ ٹیکسوں کا بوجھ لاد رہا ہے ،18،اٹھارہ ملوں کے مالک بھی اشیاءصرف پر وہی ٹیکس دے رہے ہیں جو ایک مزدور اور محنت کش دیتا ہے ،ٹیکسوں کا یہ نظام ناقابل برداشت ہے ،پانامہ لیکس اور قرضے معاف کروانے والے حکومت میں ہوں یا اپوزیشن میں سب کا محاسبہ ضروری ہے ،ہندوستان ہمارے ساتھ تجارت سے جو پیسہ کمارہا ہے ،ا سی کا اسلحہ خرید کر ہم پربرسارہاہے ۔ہم فوج کے ساتھ ہیں ،حکمران ہندوستان سے تجارتی خسارہ ختم کریں اور قوم ہندوستان کے خلاف متحد ہوجائے،جماعت اسلامی سندھ کا ورکرز کنونشن انقلاب کی نوید ثابت ہوگا،یہ کنونشن استعماری اور استحصالی نظام کے خلاف اورغریبوں ،کسانوں اور مزدوروں کیلئے خوشخبری لے کر آئے گا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور ٹیکس بار سے اپنے اعزاز میں دی گئی استقبالیہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ تقریب سے صدر بار فرحان شہزاد ایڈووکیٹ نے بھی خطاب کیا۔